• Thursday, 09 December 2021
900 سال پرانی تلوار دریافت

900 سال پرانی تلوار دریافت

اسرائیل(نیاٹائم ویب ڈیسک)دعویٰ کیاجارہاہے کہ اسرائیل کے شمالی علاقے حیفا کے ساحل کے نزدیک سے ایک غوطہ خور کو بہت پرانی تلوار ملی ہےجس کے بارے میں خیال کیا جارہا ہے کہ یہ تلوار تقریباً 900 برس پہلے کی ہے۔


غوطہ خورشلومی کاتزن کوحیفا کے ساحل کے قریب اتلی پانی سے تین اعشاریہ تین فٹ لمبی تلوار ملی جو ممکنہ طور پر 900 برس پرانی ہو سکتی ہے اور یہ صلیبی جنگوں کے دوران کسی جنگجو کےاستعمال میں رہی ہوگی۔


تلوار سے متعلق بتایا جارہا ہے کہ وہ اب تک بالکل ٹھیک ٹھاک ہے تاہم اس کی سطح پر سمندری مادوں کی تہہ چڑھی ہوئی ہے اوریہ ممکنہ طور پر سمندری ریت کی منتقلی کےباعث سطح پر آئی ہوگی۔


اسرائیل کے محکمہ نوادرات کےمطابق تلوار کو اسکی اصل حالت میں بحال کرنے کے بعد اسے عوامی نمائش کے لئےرکھ دیاجائےگا۔


اسرائیل کی میرین آرکیالوجی یونٹ کے سربراہ کوبی شاروٹ کا بتانا ہے کہ تلوار بڑی اورکافی وزنی ہے۔ جس جگہ سےسے یہ تلوار دریافت ہوئی ہے، پرانے زمانے میں یہ ساحل سمندری طوفانوں کے دوران جہازوں کی پناہ گاہ کےکام آتاتھا۔


اُن کامزید کہنا ہے کہ یہ تلوار ممکنہ طور پر 1096ء سے 1200ء کے درمیان ہونے والی صلیبی جنگوں میں شریک ہونے والے کسی جنگجو کے استعمال میں رہی ہوگی اور اسے استعمال کرنے والا انسان بھی خود کافی طاقتور رہا ہوگا کیوں کہ یہ تلوار بہت وزنی ہے۔


یاد رہے کہ عیسائیوں نے یروشلم سمیت دیگر مقدس مقامات مسلمانوں سے واپس لینے کےلئے صدیوں تک جنگیں لڑی ہیں جنہیں صلیبی جنگوں کا نام دیاگیاہے۔

 

ہیٹی: عیسائی مشنری اغو

رابطے میں رہیے

نیوز لیٹر۔

روزانہ کی بڑی خبریں حاصل کریں بذریعہ