پیناڈول بنانے والی کمپنی نے اپنی پروڈکشن بند کرنے کا عندیہ دیدیا

پیناڈول بنانے والی کمپنی نے اپنی پروڈکشن بند کرنے کا عندیہ دیدیا

کراچی(نیا ٹائم) ملٹی نیشنل کمپنی گلاسکو اسمتھ نے پاکستان میں پیناڈول ٹیبلٹ، پیناڈول ایکسٹرا اور بچوں کے پیناڈول سیرپ کی تیاری بند کرنے کا عندیہ دے دیا ہے جس کے  بعد مارکیٹ میں ان ادویات کی قلت پیدا ہو گئی ہے ۔

 

گلاسکو اسمتھ کمپنی نے سٹاک ایکسچینج اور وزیر اعظم سیکریٹریٹ کو صورتحال سے تحریری طور پر آگاہ بھی کر دیا ہے۔کمپنی کی جانب سے گزشتہ روز لکھے گئے خطوط میں حکومت سے اپیل کی گئی ہے کہ پیناڈول کی قیمتوں میں اضافہ کیا جائے جبکہ پیناڈول کی تیاری میں استعمال ہونے والے خام مال کی قیمتوں اضافے کی وجہ سے ادویات کی نئی قیمتوں کا تعین بھی کیا جائے۔خط میں مزید کہا گیا ہے کہ ڈرگ پرائسنگ کمیٹی سمیت متعلقہ حکام کو خام مال کی قیمتوں میں اضافے سے متعلق بارہا آگاہ کرچکے ہیں تاہم ہماری درخواست پر کسی قسم کا کوئی عمل نہیں کیا گیا۔

 

یہاں یہ بات قابل ذکر ہے کہ  ڈرگ پرائسنگ کمیٹی نے پیناڈول کی قیمتوں  میں اضافے کی سفارش کی تھی جسے   وفاقی کابینہ  کی جانب سے  مسترد کردیا گیا تھا ۔گیلکسو اسمتھ کلائن کنزیومر ہیلتھ کئیر پاکستان کے ترجمان کے مطابق حالیہ عرصے میں متعدد عوامل نے پیناڈول کی دستیابی کو متاثر کیا ہے  جن میں ادویہ سازی کے اہم جز پیرا سیٹامول کی  قیمت میں مقامی اور انٹرنیشنل مارکیٹ میں ہونے والا اضافہ ہے جس کے باعث مصنوعات کی پیداوار میں کمی لانے یا پھر پاکستان میں پیداوار بند کرنے پر ہمیں  مجبور کیا ہے ۔

 

 

مسافر بس میں بیٹھا ڈاکٹر مسیحا بن گیا