سول ایوی ایشن اتھارٹی میں کرپشن کا بڑا سکینڈل سامنے آگیا

سول ایوی ایشن اتھارٹی میں کرپشن کا بڑا سکینڈل سامنے آگیا

کراچی(نیا ٹائم)سول ایوی ایشن اتھارٹی میں پیسوں کے عوض بھرتیاں کرنے کا انکشاف سامنے آیا ہے  جس کے بعد ایف آئی اے نے  شکایت کنندہ کی درخواست پر مقدمہ بھی  درج کر لیا ہے ۔

 

سول ایوی ایشن اتھارٹی کے افسران کا لاکھوں روپے لیکر ملازمتیں فروخت کرنے کا نیا اسکینڈل سامنے آگیا،یہ انکشاف اس وقت  ہوا جب معاملہ وفاقی تحقیقاتی ایجنسی(ایف آئی اے)میں جا پہنچا۔شکایت کنندہ نے ایف آئی اے کو درخواست دی کہ ملتان ایئر پورٹ پر پیسے لیکر بوگس بھرتیاں کی جا رہی ہیں،شکایت کنندہ کی شکایت پرایف آئی ے نے سول ایوی ایشن اتھارٹی افسران کے خلاف مقدمہ درج کرکے تحقیقات شروع کردیں ہیں اور اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ ملزموں کو قرار واقعی سزا دلوا کر ان کو کیفر کردار تک پہنچایا جائے گا۔

 

ذرائع نے انکشاف کیا کہ ملتان ایئرپورٹ پر تعینات الیکٹریکل مکینکل شعبے کے انچارج مجاہد پرویز نے ڈیڑھ لاکھ روپے لیکر ٹیکنیشن محمد علی ملک کو سی اے اے میں عارضی ملازمت دلائی اور محمد علی سے اپنے اور دوست کے گھر کا بجلی کا مفت کام بھی کراتا رہا ۔مجاہد پرویز نے ٹیکنیشن محمد علی  کے ساتھ مستقل ملازمت کے نام پر بھی دھوکا دہی کی، شکایت کنندہ نے ایف آئی اے کو مطلع کیا کہ بوگس بھرتی میں ملتان ایئرپورٹ کے منیجرمبارک شاہ اورایڈیشنل ڈائریکٹرایچ آرسی اے اے خرم عدنان عثمانی بھی شامل ہیں۔