لیگی رہنما جاوید لطیف کےخلاف حکومت پنجاب کی درخواست مسترد

لیگی رہنما جاوید لطیف کےخلاف حکومت پنجاب کی درخواست مسترد

لاہور(نیاٹائم)لاہور ہائیکورٹ نے لیگی رہنما جاوید لطیف کی ریاست مخالف مقدمے میں ضمانت منسوخی کی حکومت پنجاب کی درخواست مسترد  کردی۔

 

لاہورہائیکورٹ کے جسٹس انوار الحق پنوں پنجاب حکومت کی ضمانت منسوخی کی درخواست پرسماعت کی پنجاب حکومت نے پراسیکیوٹر جنرل پنجاب کے زریعے جاوید لطیف کی ضمانت منسوخی کی درخواست دائر کی تھی سرکاری وکیل نے موقف اختیار کیاکہ میاں جاوید لطیف کی ضمانت میں سیشن عدالت نے حقائق کو مدنظرنہیں رکھا۔ میاں جاوید لطیف نے سیشن عدالت سے حقائق چھپاکرضمانت لی۔ غلط بیانی کرنے پرمیاں جاوید لطیف ضمانت کےاہل نہیں رہے۔

 

لہذا عدالت ضمانت منسوخ کرےجاوید لطیف کے وکیل نے بتایاکہ جاوید لطیف کے خلاف تھانہ گرین ٹاون میں  ریاست مخالف بیانات دینے کا مقدمہ درج کیا گیا تھا جس کےبعد سیشن عدالت نے قانونی طریقہ کار کےمطابق جاوید لطیف کی ضمانت منظور کی۔ حکومت پنجاب نے حقائق مسخ کرکے ضمانت منسوخی کےلئے عدالت عالیہ سے رجوع کیا۔ عدالت سے غلط بیانی کرنے پر سرکارکےخلاف بھی کاروائی ہونی چاہئیے۔ لہذا عدالت پنجاب حکومت کی ضمانت منسوخی کی درخواست خارج کرے۔عدالت نے تمام دلائل سننے کے بعد  لیگی رہنما جاوید لطیف کی ریاست مخالف مقدمے میں ضمانت منسوخی کی حکومت پنجاب کی درخواست مسترد  کردی ۔

 

سموگ پرقابوپانےکےلئےزرعی اوریونیورسٹی آف ٹیکنالوجی سے مددلی جائے،عدالت