ایک اور بھارتی ہاسٹل میں لڑکیوں کی ویڈیوز بنانے کا انکشاف

ایک اور بھارتی ہاسٹل میں لڑکیوں کی ویڈیوز بنانے کا انکشاف

تامل ناڈو (نیا ٹائم ویب ڈیسک )بھارت  میں چندی گڑھ یونیورسٹی کے بعد بھارت کے ایک اور کالج میں طالبات کی نہاتے وقت ویڈیوز بنا کر وائرل کئے جانے کا انکشاف ہوا ہے ۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست تامل ناڈو کے ایک پرائیویٹ کالج کے ہاسٹل میں رہائش پذیر طالبات کی نازیبا ویڈیوز بنا کر اپنے دوست کو بھجوانے والی طالبہ کو گرفتار کر لیا ۔

پولیس ذرائع کے مطابق نجی کالج میں بی ایڈ کی طالبہ کلیسواری نے اپنی ساتھی طالبات کی ہاسٹل میں نہاتے ہوئے ویڈیوز بنا کر اپنے دوست اشوک کو واٹس ایپ پر بھجوا دیں ۔

پولیس ذرائع کے مطابق اشوک شادی شدہ اور تین بچوں کا باپ ہے ، وہ نواحی علاقے میں ایک کلینک بھی چلا رہا ہے ۔ جہاں کلیسواری ملازمت کرتی تھی اسی دوران دونوں کے درمیان تعلقات استوار ہوئے ۔

پولیس نے مزید کہا کہ پہلے اشوک صرف کلیسواری کی ویڈیوز منگواتا تھا تاہم بعد میں دیگر طالبات کی بھی نہاتے ہوئے ویڈیوز بنانے کیلئے دباو ڈالتا رہا ۔ تاہم طالبات نے شک ہوونے پر کلیسواری کا موبائل چھین لین ۔

ہاسٹل میں مقیم دیگر طالبات نے کلیسواری کے موبائل فون سے کئی لڑکیوں کی نازیبا ویڈیوز تلاش کر لیں ۔ جس پر تھانے میں شکایت درج کروائی گئی ہے ۔ پولیس نے ملزمہ کلیسواری اور اس کے دوست اشوک کو گرفتار کر لیا ۔

 

امریکی مشورے پر چین کا رد عمل بھی سامنے آ گیا