• Tuesday, 29 November 2022
اڈیالہ جیل میں قیدیوں کے ساتھ مبینہ غیر انسانی سلوک پر تحقیقات کا حکم

اڈیالہ جیل میں قیدیوں کے ساتھ مبینہ غیر انسانی سلوک پر تحقیقات کا حکم

اسلام آباد (نیا ٹائم) راولپنڈی کی اڈیالہ جیل میں قیدیوں کے ساتھ مبینہ غیر انسانی سلوک پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے تحقیقات کا حکم دے دیا ۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے اڈیالہ جیل میں قیدیوں کے ساتھ مبینہ ناروا سلوک کے حوالے سے کیس کی سماعت کرتے ہوئے تحریری حکم نامہ جاری کر دیا ۔ عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ سیکرٹری وزارت انسانی حقوق نے عدالتی فیصلے کے روشنی میں کئے گئے اقدامات سے آگاہ کیا ۔ سیکرٹری وزارت انسانی حقوق نے عدالت کو یقین دہانی کروائی کہ ہیومن رائٹس اییکٹ 2012 ء پر مکمل عملدرآمد کیا جاءے گا اور ہیومن رائٹس کورٹس بھی قائم کی جائیں گے ۔

عدالت نے اپنے تحریری حکم میں لکھا کہ کمیشن اور پمز ہسپتال کی رپورٹس  سے ظاہر ہوتا ہے کہ پٹیشن میں عائد الزامات بادی النظر میں بے بنیاد نہیں ، گزشتہ سماعت پر جمع کروائی گئی خفیہ رپورٹس سے بھی یہی ظاہر ہوتا ہے کہ اڈیالہ جیل کو قانون کے مطابق چلانے کے بجائے ایک حراستی کیمپ میں بدل دیا گیا ہے ۔

عدالت نے اپنے حکم میں کہا ہے کہ ایسا  لگ رہا ہے کہ جیل میں قیدیوں سے غیر انسانی سلوک کیا جاتا ہے اور انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں بھی جاری ہیں ۔ عدالت قومی انسانی حقوق کمیشن کو اڈیالہ جیل میں ہونے والے انسانی حقوق کی پامالیوں پر بھی تحقیقات کا حکم دیا ہے ۔

عدالت نے حکم دیا کہ قومی انسانی حقوق کمیشن کے ممبر پنجاب تحقیقاتی رپورٹ جلد اسلام آباد ہائیکورٹ میں جمع کروائی جائے ۔

 

ایڈمنسٹریٹر کراچی مرتضیٰ وہاب نے عہدے سے استعفیٰ دیدیا