آڈیو لیک سکینڈل؛اعلیٰ سطح پر تحقیقات شروع کردی گئی

آڈیو لیک سکینڈل؛اعلیٰ سطح پر تحقیقات شروع کردی گئی

اسلام آباد(نیاٹائم)وزیراعظم ہاؤس سے ڈیٹا ہیک ہونے کی انوسٹی گیشن کیلئے جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم (جے آئی ٹی)نے اعلیٰ سطح پر تحقیقات کا آغاز کردیا۔

 

ذرائع کے مطابق پرائم منسٹر ہاؤس کا ڈیٹا ہیک ہونے کے معاملے کی ہائی لیول انوسٹی گیشن  کا آغاز کر دیا گیا جبکہ جے آئی ٹی حساس اداروں کے ایک ایک نمائندے پر مشتمل ہے۔سورسز کا کہنا ہے کہ جے آئی ٹی اس بات کا پتہ چلائے گی کہ کیسے آئی ٹی ڈیٹا ہیک ہوا، جے آئی ٹی کو اتھارٹی ہو گی کہ وہ وزیراعظم ہاؤس کے عملے سے بھی پوچھ گچھ کرسکے۔ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم ہاؤس میں ڈیوائسز لگائی گئیں یا موبائل ریکارڈنگ ہوئی اس بات کا پتہ لگایا جائے گا، تحقیقاتی ٹیم جائزہ لے گی کہ واقعے کے وقت کون کون افسر پرائم منسٹر ہاؤس  میں آن ڈیوٹی تھے، وزیراعظم سیکرٹریٹ میں تعینات خصوصی برانچ کے اہلکاروں سے بھی چھان بین ہوں گی۔ذرائع کے مطابق وزیر اعظم ہاؤس اور دفتر پر ڈیوٹی دینے والے سکیورٹی اہلکاروں کی نقل و حرکت بھی محدود کر دی گئی ہے۔

 

دوسری طرف وزیراعظم شہباز شریف نے وزیراعظم ہاؤس سمیت اہم جگہوں سے خفیہ ریکارڈنگ کے معاملے پر قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس بدھ کو وزیراعظم ہاؤس میں بلا لیا ہے۔اجلاس میں سکیورٹی اداروں کے سربراہان بھی شریک ہونگے۔خیال رہے کہ وزیراعظم ہاؤس میں ہونے والے اجلاس کی دو دن پہلے آڈیو سامنے آئی تھی جس کے بعد پی ایم ہاؤس کی سکیورٹی پر کئی سوالات اٹھ رہے ہیں۔وزیر داخلہ رانا ثنا اللہ اس حوالے سےبتا چکےہیں کہ معاملےکی انوسٹی گیٹ کیا جارہا ہے۔

 

مریم نواز کا جی سی یونیورسٹی کے وائس چانسلر کیخلاف کارروائی کا مطالبہ