• Tuesday, 29 November 2022
امیر ایاز جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

امیر ایاز جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے

اسلام آباد(نیاٹائم)اسلام آباد کے مقامی کورٹ نے سارہ قتل کیس میں مرکزی ملزم کے والدسینئرصحافی ایاز امیر کو ایک روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کو حوالے کردیا گیا۔

 

نیاٹائم کے مطابق صحافی ایاز امیر کو ڈیوٹی مجسٹریٹ سول جج زاہد ترمذی کے کورٹ میں لایا گیا، پولیس نے کورٹ سے ملزم کے چار روزہ جسمانی ریمانڈ کی درخواست کی لیکن کورٹ نے ایک روز کا ریمانڈ منظورکرلیا۔ایاز امیر کے وکیل نے عدالت میں موقف اپنایا کہ میرا موکل ایف آئی آر میں نامزد نہیں، انکے خلاف کوئی ثبوت نہیں دوسری طرف پولیس نے صحافی کے جسمانی ریمانڈ کی استدعا کرتے ہوئے موقف اختیارکیا تھا کہ کیس ہائی پروفائل ہے اس لیے ملزم کے والد سے پوچھ گچھ ضروری ہے۔

 

یاد رہے کہ کالم نگار ایازامیر کو بہو سارہ کے قتل کیس میں گزشتہ دن حراست میں لیا گیا تھا۔جمعہ کے دن ایاز امیر کے بیٹے شاہنواز نے اپنی بیوی کا بے دردی سے قتل کیا تھا، ملزم پہلے ہی جسمانی ریمانڈ پر پولیس کی حراست میں ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ سارہ کے قتل کیس میں 302 کے ساتھ دفعہ 109 بھی لگائی گئی ہے اور ایاز امیر اور انکی بیوی کو بھی شامل تفتیش کیا گیا ہے۔

 

قبل ازیں ڈسٹرکٹ اینڈ سیشن کورٹ اسلام آباد نے بیوی کے قتل کے ملزم شاہنواز امیر کو دو روزہ جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کیا جبکہ ان کے والد ایاز امیر کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیے تھے۔دوسری طرف پولیس نے مرکزی ملزم کے والدین ایاز امیر، ان کی بیوی ، ملزم کے چچا اور چچی کے وارنٹ گرفتاری جاری کرنے کی درخواست بھی کر رکھی ہے۔

 

ایاز امیر کے بیٹے اور بہو کے درمیان لڑائی کی وجہ بھی سامنے آ گئی