• Friday, 30 September 2022
کراچی والوں کے بجلی بل میں میونسپل ٹیکس کی وصولی شروع

کراچی والوں کے بجلی بل میں میونسپل ٹیکس کی وصولی شروع

کراچی(نیاٹائم)شہرقائد کے صارفین سے بجلی کے بلوں میں میونسپل یوٹیلیٹی چارجز کی وصولی کا آغاز کردیا گیا۔

 

نیاٹائم کو موصول تفصیلات کے مطابق اٹھائیس لاکھ صارفین پر یہ ٹیکس وصول عائد کیا جائے گا جس سے تین ارب روپے سے زائدکی انکم ہوگی، دوسو یونٹ استعمال کرنے پر پچاس روپے، سات سو یونٹ پر ایک سو پچاس روپے اور اس سے اوپردوسوروپے جبکہ صنعتوں کو اس مد میں پانچ  ہزار روپے ٹیکس ادا کرنا ہوگا۔ ایڈمنسٹریٹر کے ایم سی مرتضیٰ وہاب نے اس حوالے سے شہرکے باسیوں کو مطمئن کرنے کی کوشش کرتے ہوئے کہا ہے کہ مجموعی طور پرتین ارب روپے اکٹھے ہونگے۔

 

دوسری طرف شہریوں نے احتجاجاً کے الیکٹرک کےآفسز اورگاڑیوں میں کچرا پھینکنے کا عمل شروع کررکھا ہے جس کی ویڈیو بھی سوشل میڈیا پرتیزی سے پھیل رہی ہے جس میں شہری کہیں کے الیکٹرک کے آفس کے سامنے تو کہیں کے الیکٹرک کی گاڑی میں کچرا پھینک ڈال رہے ہیں، اس احتجاج کا باعث بجلی کے بلوں میں میونسپل یوٹیلیٹی چارجز اینڈ ٹیکس وصول کرنا ہے۔میونسپل یوٹیلیٹی چارجز اینڈ ٹیکس کی شروعات 2009 میں سابق میئر کراچی مصطفیٰ کمال کے دور میں کی گئی تھی۔

 

 تاہم تب گھروں سے کچرا اٹھانے اور پانی فراہم کرنے سمیت متعدد معاملات کے ایم سی سرانجام دیتی تھی لیکن اب کچرا اُٹھانا سالڈ ویسٹ منیجمنٹ کے دائرہ اختیار میں ہے جبکہ پانی واٹر بورڈ دیتا ہے۔شہریوں کی اکثریت کا گلہ ہے کہ جب وہ اپنا کچرا بھی اپنے پیسوں پر اُٹھواتے ہیں اور ان کو پانی کی قیمت بھی ادا کرنا پڑتی ہے تو پھر اس مد میں ٹیکس کیوں وصول کیا جارہا ہےاس حکومت نے کسی پہلو سے بھی غریب آدمی کو سکھ کا سانس نہیں لینے دینا۔

 

نیپر کو بجلی میں اضافے کی درخواست موصول