تباہ کن سیلاب کے باوجود ملک دیوالیہ نہیں ہو گا ، مفتاح اسماعیل

تباہ کن سیلاب کے باوجود ملک دیوالیہ نہیں ہو گا ، مفتاح اسماعیل

اسلام آباد (نیا ٹائم) وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا ہے پاکستان میں حالیہ تباہ کن سیلاب کے باوجود قرضوں سے ملک دیوالیہ نہیں ہو گا ۔

برطانوی خبر رساں ادارے کو انٹرویو دیتے ہوئے مفتاح اسماعیل نے کہا کہ چیلنجنگ صورتحال میں معاشی استحکام کا راستہ پہلے ہی مشکل تھا جو اب مزید مشکل تر ہو گیا ہے ، اگر سمجھداری سے فیصلے کئے جو ہم کر بھی رہے ہیں تو ہم بالکل بھی دیوالیہ نہیں ہوں گے ۔

وزیر خزانہ نے سیلاب سے ہونے والی تباہی کے حوالے سے بات کرتے ہوئے کہا کہ زر مبادلہ کے ذخائر میں اضافے سمیت معاشی استحکام  کے حوالے سے پالیسیاں اور اہداف ٹریک پر ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ سیلاب کی وجہ سے کپاس جیسی مزید درآمدات کی وجہ سے کرنٹ اکاونٹ بیلنس کو 4 ارب ڈالرز تک نقصان پہنچنے کا خدشہ ہے اور اس سے برآمدات پر بھی منفی اثر پڑے گا ، تاہم پاکستان کے زر مبادلہ کے ذخیر میں 4 ارب ڈالر تک اضافہ کر لیں گے ۔

مفتاح اسماعیل نے کہا کہ سیلاب کی وجہ سے کرنٹ اکاونٹ خسارہ میں 2 ارب ڈالر سے زیادہ اضافہ نہیں ہو گا ۔ سیلاب کے بعد معیشت کو کم از کم 18 ارب ڈالر کا نقصان پہنچ چکا ہے جو کہ 30 ارب ڈالرز تک جانے کا خدشہ ہے ۔ کریڈٹ ڈیفالٹ کے خطرے میں بھی اضافہ ہوا ہے ، بانڈ کی قیمتوں میں کمی ہوئی ہے ، لیکن 15 سے 20 روز میں مارکیٹ معمول پر آ جائے گی ۔

وزیر خزانہ نے کہا کہ 4 ارب ڈالر سے زائد بیرونی مالیاتی ذرائع کو محفوظ رکھا گیا ہے جبکہ رواں مالی سال میں قطر ، متحدہ عرب امارات اور سعودی عرب سے بھی 5 ارب ڈالرز کی سرمایہ کاری کی جائے گی ، تیل کیلئے 1 ارب ڈالر کی موخر ادائیگی کی سہولت کے حوالے سے بھی ایک دوست ملک کے ساتھ جلد قانونی دستاویز پر دستخط کرنے جا رہے ہیں ۔

 

آرمی چیف کا دورہ ، چین کا پاکستان کیلئے ہنگامی امداد کا اعلان