• Friday, 30 September 2022
سنگدل باپ نے ہوم ورک نہ کرنے پر 12 سالہ بیٹے کو جلا دیا

سنگدل باپ نے ہوم ورک نہ کرنے پر 12 سالہ بیٹے کو جلا دیا

کراچی (نیا ٹائم) شہر قائد میں سنگدل باپ نے ظلم کی انتہا کر دی ، اورنگی ٹاون کے علاقے میں سکول کا ہوم ورک نہ کرنے پر باپ نے 12 سالہ بیٹے کو تیل چھڑک کر آگ لگا دی ، شدید جھلسنے کے باعث بچہ ہسپتال میں دم توڑ گیا ۔

افسوسناک واقعہ شہر قائد کے علاقے اورنگی ٹاون سیکٹر ساڑھے 11 میں 14 ستمبر کو پیش آیا جہاں رئیس امروہی کالونی میں بے رحم شخص نذیر نے اپنے ہی 12 سالہ بیٹے شہیر کو  سکول کا ہوم ورک نہ کرنے پر تیل چھڑک کر آگ لگا دی ، بچہ آگ لگنے کے باعث بری طرح جھلس گیا ۔

بچے کو پہلے قطر ہسپتال پھر سول ہسپتال کے برن وارڈ میں منتقل کیا گیا ، ہسپتال پہنچنے کے بعد 35 گھنٹوں بعد زندگی و موت کی کشمکش میں مبتلا رہنے کے بعد بچہ دم توڑ گیا ۔ بیٹے کی درد ناک موت کے  دو روز بعد ماں نے ظالم باپ کے خلاف مقدمہ درج کروا دیا ۔ پولیس نے ملزم نذیر کو گرفتار کر لیا ۔

ملزم نے پولیس کو ابتدائی تفتیش کے دوران دئیے گئے بیان میں کہا ہے کہ اس کا بیٹا کافی دنوں سے پڑھ نہیں رہا تھ امیں نے اسے ڈرانے کیلئے اس پر مٹی کا تیل چھڑک کر اسے ڈرانے کیلئے جلتی ہوئی تیلی دکھائی مگر اسی دوران مٹی کے تیل کے آگ پکڑ لی ۔ جیسے ہی بچے نے چیخنا شروع کیا تو اسے ہوش آیا اور وہ فوری طور پر بچے کو ہسپتال لے کر گیا ۔

پولیس کے مطابق بچے نے والد  نے ابتدائی تفتیش میں بتایا ہے کہ بچے نے اس سے پتنگ اڑانے کی بھی ضد کی تھی ، باپ نے بچے سے پڑھائی اور ہوم ورک کے حوالے سے پوچھا جس پر وہ کوئی جواب نہ دے سکا جس پر باپ نے غصے میں آ کر اسے جلا دیا ۔

دوسری طرف پویس نے ملزم کو جوڈیشل مجسٹریٹ غربی کی عدالت میں پیش کیا جہاں عدالت نے ملزم نذیر کا 5 روزہ جسمانی ریمانڈ دیتے ہوئے اسے پولیس کے حوالے کر دیا ۔

 

ہسپتال سے نومولود اغواء ہونے والا بچہ بازیاب