• Thursday, 29 September 2022
بھارتی یونیورسٹی میں نازیبا ویڈیوز بنائے جانے کے انکشاف پر طالبات سراپا احتجاج

بھارتی یونیورسٹی میں نازیبا ویڈیوز بنائے جانے کے انکشاف پر طالبات سراپا احتجاج

چندی گڑھ (نیا ٹائم ویب ڈیسک)بھارتی پنجاب کے دارالحکومت چندی گڑھ کی یونیورسٹی میں لڑکی کی نازیبا ویڈیوز بنا کر وائرل کرنے کے انکشاف پر طالبات یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف سراپا احتجاج ، طالبات نے یونیورسٹی انتظامیہ کے خلاف احتجاج کرتے ہوئے نعرے بازی بھی کی ۔

بھارتی میڈیا کے مطابق پنجاب کی چندی گڑھ یونویرسٹی کی طالبات نے انتظامیہ کے خلاف احتجاج کیا جس پر پرنسپل نے پولیس طلب کر لی ، پرنسپل نے یونیورسٹی کے مرکزی دروازے پر تالے بھی لگوا دئیے ۔ جس پر مشتعل طالبات نے یونیورسٹی کے دروازے پر چڑھ کر احاطے میں داخل ہونے کی کوشش کی تاہم پولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے طالبات کو یونیورسٹی کی حدود سے باہر نکال دیا ۔

چندی گڑھ یونیورسٹی کی طالبات یونیورسٹی میں بنائی گئی نازیبا ویڈیوز کے وائرل ہونے پر سراپا احتجاج ہیں ، پولیس نے احتجاجی طالبات  کو یقین دہانی کروائی کہ واقعہ میں ملوث افراد کے خلاف مقدمہ درج کر کے انہیں سزا دلوائی جائے گی ۔

پولیس ذرائع کا کہنا ہے کہ ویڈیو صرف ایک لڑکی کی جانب سے بنائی گئی ہے  ، وہ بھی اس نے خود بنائی اور اس نے خود ہی ہماچل پردیش میں مقیم اپنے بوائے فرینڈ کو بھجوائی تھی ۔

پولیس کا کہنا ہے ویڈیو نہ تو کسی نے خفیہ طور پر بنائی ، نہ ہی یونیورسٹی میں کسی طرح کے خفیہ کیمرے لگائے گئے ہیں ، پولیس کے مطابق یونیورسٹی کی طالبہ نے خود ہی ویڈیو بنائی جس پر اسے نازیبا ویڈیو بنا کر وائرل کرنے کے الزام میں گرفتار  کر لیا ہے جبکہ اس کے بوائے فرینڈ کی گرفتاری کیلئے بھی پولیس ٹیم کو ہماچل روانہ کر دیا گیا ہے ۔

 

جاپان میں بڑے سمندری طوفان کا خدشہ،لاکھوں شہریوں کونقل مکانی کی ہدایت