سعودی شہری نے

سعودی شہری نے "سچی محبت " کی تلاش میں 53 شادیاں کر ڈالیں

ریاض (نیا ٹائم ویب ڈیسک ) 43 سالہ سعودی شہری نے "سچی محبت " اور امن و سکون کی تلاش میں  53 شادیاں کر ڈالیں ، سعودی شہری ابو عبداللہ کا کہنا ہے کہ وہ کسی ایسی عورت کی تلاش میں تھے جو انہیں امن و سکون کے ساتھ خوشی دے سکے ۔

عرب میڈیا کی رپورٹ کے مطابق 43 سالہ ابوعبداللہ نے کثیر الازدواجی کی وجہ بتاتے ہوئے کہا ہے کہ ان کی کثیر شادیوں کی وجہ یہ تھی کہ انہیں ایسی خاتون کی تلاش تھی جو انہیں سکون دے سکے اور انہیں خوشی دے سکے ۔

گلف نیوز کو دئیے گئے انٹرویو میں ابو عبداللہ نے کہا کہ انہوں نے اپنی تمام بیویوں کے ساتھ انصاف کی کوشش کی ۔ انہوں نے پہلی شادی 20 برس کی عمر میں خود سے 6 سال بڑی خاتون سے کی ، پہلی شادی کی وقت انہوں نے ایک سے زائد شادیوں کے بارے میں نہیں سوچا تھا کیونکہ وہ اہلیہ اور بچوں کے ساتھ زندگی سے مطمئن تھے ۔ لیکن شادی کے تین سال بعد انہیں کچھ مسائل کی وجہ سے دوسری شادی کا فیصلہ کرنا پڑا ۔

سعودی شخص کے مطابق دوسری شادی کے بعد ان کی بیویوں کے درمیان پیدا ہونے والے مسائل اور کشیدگی نے انہیں پھر سے شادی کے بارے میں سوچنے پر مجبور کیا ، یوں امن و سکون کی تلاش میں وہ ایک کے بعد ایک شادی کرتے چلے گئے اور انہوں نے 43 برس کی عمر میں 53 شادیاں کر ڈالیں ۔

سعودی شخص کا کہنا تھا کہ ان کی سب سے کم عرصہ چلنے والی شادی کا دورانیہ صرف ایک رات ھا ، انہوں نے زیادہ تر شادیاں سعودی خواتین سے کیں تاہم غیر ملکی دوروں کے دوران غیر ملکی خواتین کے ساتھ بھی شادیاں کیں ۔

عرب میڈیا کے مطابق ایک سوال کے جواب میں  ابو عبداللہ نے کہا کہ وہ اب مزید شادیوں کا ارادہ نہیں رکھتے ۔ اتنی زیادہ شادیوں کے باعث ابوعبداللہ کو "صدی کا کثیر الازدواج شہری" کا خطاب بھی دیا گیا ہے ۔

 

3بچوں کی ماں کی میٹرک امتحانات میں ٹاپ پوزیشن