• Thursday, 29 September 2022
کرغیزستان اور تاجکستان کے درمیان بھی جھڑپیں ، 24 ہلاکتوں کی اطلاعات

کرغیزستان اور تاجکستان کے درمیان بھی جھڑپیں ، 24 ہلاکتوں کی اطلاعات

بشکیک (نیا ٹائم ویب ڈیسک )جنگ بندی معاہدے کے باوجود کرغیزستان اور تاجکستان کی فوجوں کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں ، مجموعی طور پر 24 افراد کے مارے جانے کی بھی اطلاعات ہیں ۔

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق کرغیزستان اور تاجکستان کی سرحدوں پر دونوں افواج کے درمیان شدید جھڑپیں ہو رہی ہیں ، جس کے باعث سرحدی علاقوں میں مقیم شہری اپنے گھر بار اور مال مویشی چھوڑ کر محفوظ مقامات پر منتقل ہو گئے ہیں ۔

دونوں ممالک کے درمیان سیز فائر معاہدے کے باوجود سرحدوں پر افواج کے درمیان جھڑپیں جاری ہیں جس میں مجموعی طور پر دونوں اطراف سے 24 افراد کی ہلاکتوں کی اطلاعات ہیں جبکہ جھڑپوں میں 80 سے زائد فوجیوں کے زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں ۔ فائرنگ کے باعث عام شہری بھی ہلاک اور زخمی ہوئے ہیں ۔

کرغیزستان نے تاجکستان کی فوج پر الزام عائد کیا ہے کہ انہوں نے صوبے باد کند میں راکٹ برسائے جس کی وجہ سے کرغیزستان کے ایک لاکھ سے زائد رہائشیوں کو محفوظ مقامات کی جانب منتقل ہونا پڑا ۔

دوسری طرف تاجکستان نے دعویٰ کیا ہے کہ کرغیزستان کی افواج نے سرحد پر اپنی پوزیشنیں تبدیل کیں اور ہماری سرزمین میں آباد دیہاتیوں پر گولیاں چلائیں ۔

واضح رہے دونوں ممالک میں روسی افواج کے اڈے موجود ہیں جس کی وجہ سے روس نے دونوں ممالک کے درمیان جنگ بندی  کروائی تھی ۔

 

احمد مسعود نے طالبان حکومت کے خلاف اتحاد کو ناگزیر قرار دیدیا