• Friday, 30 September 2022
سندھ ہائیکورٹ ، کم سن لڑکیوں کو شوہروں کے ساتھ جانے کی اجازت

سندھ ہائیکورٹ ، کم سن لڑکیوں کو شوہروں کے ساتھ جانے کی اجازت

کراچی (نیا ٹائم)سندھ ہائیکورٹ نے کم عمری  میں پسند کی شادی کرنے والی لڑکیوں کے مبینہ اغوا کی درخواستیں نمٹا دیں ، عدالت نے لڑکیوں کو ان کے شوہروں کے ہمراہ جانے کی اجازت دے دی ۔

سندھ ہائیکورٹ میں پسند کی شادی کرنے والی لڑکیوں کے مبینہ اغوا سے متعلق درخواستوں کی سماعت کرتے ہوئے لڑکیوں کو ان کے شوہروں کے ہمراہ جانے کی اجازت دے دی ۔ عدالت نے تفتیشی افسر کو سی کلاس کی رپورٹ بھی ٹرائل کورٹ میں جمع کروانے کی ہدایت کر دی ۔

پولیس حکام نے عدالتی حکم پر لڑکیوں کے بیانات کے بعد کیسز سی کلاس کر دئیے ۔ لڑکیوں نے بیان دئیے تھے کہ انہیں کسی نے اغوا نہیں کیا بلکہ انہوں نے اپنی مرضی سے شادی کی ہے ۔

سندھ ہائیکورٹ نے مسمات عتیقہ اور سکینہ کی درخواستوں پر کارروائی نمٹا دی ۔ عدالت نے خیر پور میرس سے پسند کی شادی کرنے والی لڑکی ناہید کو بھی تحفظ دینے کا حکم دیا ہے ۔ عدالت نے ناہید کو کٹہرے میں کھڑا کر کے اس کا بیان لیا ، لڑکی نے عدالت کو بتایا کہ اسے کسی نے اغوا نہیں کیا بلکہ اس نے مرضی سے شادی کی ہے ۔

درخواست گزار کے وکیل نے عدالت میں موقف اختیار کیا تھا کہ لڑکی کو اس کے گھروالوں نے کاری قرار دیا ہے ، والدین نے متعلقہ عدالت میں 22 اے کی درخواست بھی دائر کی ہے ۔ لڑکی یا لڑکے کے متعلقہ عدالت میں پیش ہونے پر ان کے قتل کا خدشہ ہے ،اس لیے متعلقہ عدالت میں صرف وکیل کے ذریعے  پیروی کرنے کی اجازت دی جائے ۔

عدالت نے درخواست منظور کرتے ہوئے تفتیشی افسران کو 3 روز میں مقدمات سی کلاس کرنے کی رپورٹ ٹرائل کورٹ میں پیش کرنے کا حکم دے دیا ہے ۔ پسند کی شادی کرنے والی لڑکیوں کے اہلخانہ نے ان کے مبینہ اغوا پر لڑکوں کے خلاف مقدمات درج کروائے گئے تھے ۔

 

خیبرپختونخوا میں بدامنی اور ٹارگٹ کلنگ میں اضافہ ہو گیا ، عنایت اللہ