• Friday, 30 September 2022
خیبرپختونخوا میں بدامنی اور ٹارگٹ کلنگ میں اضافہ ہو گیا ، عنایت اللہ

خیبرپختونخوا میں بدامنی اور ٹارگٹ کلنگ میں اضافہ ہو گیا ، عنایت اللہ

پشاور(نیا ٹائم)  خیبرپختونخوا اسمبلی کے رکن جماعت اسلامی عنایت اللہ نے کہاگزشتہ 6 ماہ کے دوران خیبرپختونخوا میں بدامنی ، ٹارگٹ کلنگ کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے ۔  

انہوں نے کہا کہ مرکزی اور صوبائی حکومتیں ایک دوسرے کو بد امنی کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے ذمہ داری ایک دوسرے پر ڈال ہے ہیں ۔ صوبہ بے امنی کا شکار ہو چکا ہے لیکن کوئی ماننے کو تیار نہیں ۔

جماعت اسلامی کے رکن صوبائی اسمبلی عنایت اللہ نے کہا کہ سابقہ فاٹا کے اندر اب تک 254 افراد کو ٹارگٹ کلنگ میں شہید کیا جا چکا ہے ۔ باجوڑ میں ملک لیاقت عللی کے بعد تحصیل چیئرمین کو بھی نشانہ بنایا گیا اور سوات میں امن کمیٹی کے سربراہ کو ساتھیوں سمیت شہید کیا گیا ۔

انہوں نے کہا ہے کہ ملاکنڈ ڈویژن کے تمام اضلاع کے لوگوں کو بھتے کی کالیں موصول ہو رہی ہیں ، اراکین صوبائی اسمبلی خوف و ہراس کے باعث اسلام آباد منتقل ہو رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جن نمبروں سے لوگوں کو بھتے کی کالز موصول ہوئی ہیں ان کے خلاف مقدمات بھی درج ہوئے ہیں ، لیکن اس کے باوجود کسی کو گرفتار نہیں کیا گیا ہے ۔

 

کراچی پولیس چیف نے لاہور کے جرائم کے حوالے سے بڑی بات کہہ دی