ظلم کی انتہا، بھائی نے بھائی کی جان لے لی

ظلم کی انتہا، بھائی نے بھائی کی جان لے لی

بہاولنگر(نیاٹائم)دو ستمبر کو محمد پورسنساراں میں زیادتی کے بعد قتل کیے جانے والے 7 سالہ بچے کے کیس میں، وکٹم کے بڑے بھائی  نے دوران تفتیش بچے کے ساتھ زیادتی اور قتل کا اعتراف کرلیا۔

 

ملزم نے پولیس کے سامنے انکشاف کیا ہے کہ وہ ایک اس کام کا عادی  ہے جو کہ پہلے بھی اس قسم کی وارداتوں میں ملوث رہا ہے ۔قاتل کے بیان کے مطابق ، وقوعہ کے روز اس نے گاؤں میں موجود ایک کم عمر  لڑکے کو ، جس کو وہ پہلے بھی کچھ پیسوں کے عوض زیادتی کا نشانہ بناتا رہا ہے ، ٹارگٹ کیا ہوا تھا تاہم کافی تلاش کے باوجود جب مذکورہ لڑکا اسے نہ ملا تو وہ گلی میں کھیلتے ہوئے اپنے بھائی شیرعلی کو ورغلا کر مقامی زمیندار کے ایک خالی ڈیرہ میں لے گیا اور زیادتی کا نشانہ بنانے کے دوران بچے کے چیخنے پر اسے گلا گھونٹ کر قتل کردیا، قاتل نے پولیس انوسٹیگیٹرز کو بتایا کہ وقوعہ کے روز زیادہ مقدار میں سیکس ٹیبلٹ استعمال کرنے کی وجہ سے وہ اپنے حواس میں نہیں تھا  ،لہٰذا جب اسے اپنا مطلوبہ شکار نہ ملا تو اس نے مجبورا اپنے بھائی کے ساتھ یہ فعل کیا۔

 

 قاتل کے مطابق ، وہ اکثرو بیشتر ،گلی، محلے میں آوارہ پھرنے والے کم عمر بچوں کو اپنا ٹارگٹ بناتا تھا کیونکہ وہ ناصرف آسان ہدف ثابت ہوتے تھے بلکہ انہیں پیسوں کے لالچ یا دھمکی سے باآسانی خاموش بھی کروایا جا سکتا تھا ۔ایس ایچ او گھمنڈپور اور کیس کےآئی او شہزاد اشفاق کا کہنا ہے کہ زیادتی و قتل کے اس اندھے کیس کو حل کرنے کے دوران پولیس نے متعدد مشکوک لوگوں سے باز پرس کی جو ماضی میں کسی نہ کسی حوالہ سے چائلڈ ابیوز میں ملوث رہےتھے تاہم پولیس کوئی کلیو حاصل کرنے میں کامیاب نہ ہو سکی ۔

 

 مسٹر اشفاق کے مطابق ، بعد ازاں جب پولیس ٹیم نے وکٹم کی فیملی کو انوسٹیگیٹ کرنے کا فیصلہ کیا تو دوران تفتیش مقتول کے بڑے بھائی، اور بہنوئی کی طرف سے ریکارڈ کروائے جانے والے مشکوک بیانات کے بعد پولیس نے جب انکو باقاعدہ انٹیروگیٹ کیا تو  وکٹم کے بڑے بھائی نے اعتراف جرم کرتے ہوئے پولیس کو بتایا کہ اس نے جرم کے بعد اپنے بہنوئی سے مدد کی درخواست کی اور اس کی مدد سے بچے کی باڈی کو ڈیرہ سے باہر گلی میں شفٹ کیا۔ایس ایچ او شہزاد اشفاق کے مطابق حقائق کو چھپانے اور اعانت جرم کے الزام میں قاتل کے بہنوئی پر بھی مقدمہ درج کر لیا گیا ہے اور دونوں ملزمان کو جیل بھجوا دیا گیا ہے۔

 

ظلم کی انتہا،24سالہ لڑکی کی لاش جلادی گئی