• Friday, 30 September 2022
پنجاب میں گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر

پنجاب میں گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر

لاہور(نیاٹائم) وزیراعلیٰ پنجاب  چودھری پرویز الٰہی پنجاب کو گندم فراہم نہ کرنے پر وفاقی حکومت کے رویے پر برہم ہو گئے دوسری جانب چودھری پرویزالہی ٰ نے گندم کی امدادی قیمت 3ہزارروپے فی من مقررکرنےکی بھی منظوری دےدی۔

  

وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویزالہی کا کہنا ہے کہ وفاقی حکومت گندم فراہم نہ کرنے کے حوالے سے پنجاب کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کر رہی ہے۔پنجاب میں بارشوں اور سیلاب سے کئی لاکھ ٹن گندم ضائع ہوئی ہے۔صوبے میں 10 لاکھ ٹن گندم کی قلت ہے۔وفاقی حکومت نے پنجا ب کی درخواست کے باوجود گندم فراہم نہیں کی۔

 

وزیراعلیٰ چودھری پرویز الٰہی کا گندم کے کاشتکاروں کیلئے بڑا اعلان کیا ہے، چودھری پرویز الٰہی نے گندم کی امدادی قیمت 3 ہزار روپے فی من مقرر کرنے کی منظوری دے دی،امدادی قیمت میں اضافے سے کاشتکاروں کو ان کی محنت کا پورا معاوضہ ملے گا۔اگلے برس گندم کے زیرکاشت رقبے میں اضافہ ہوگا۔وزیراعلیٰ چودھری پرویز الٰہی کا صوبے کے خارجی راستوں پر گندم و آٹے کی سمگلنگ روکنے کیلئے موثر اقدامات کا حکم سامنے آیا ہے۔دیگر صوبوں کے مقابلے میں پنجاب میں گندم اور آٹے کے نرخ کم ہیں۔محکمہ خوراک کے حکام متعلقہ اضلاع کے ڈی پی اوز اور ڈپٹی کمشنرز کے ساتھ مل کر خارجی راستوں پر چیکنگ کے نظام کو مزید سخت کریں۔گندم اور آٹے کی سمگلنگ میں ملوث عناصر کے خلاف بلاامتیاز ایکشن لیاجائے۔

 

پنجاب حکومت کا کابینہ سٹینڈنگ کمیٹی برائے گندم تشکیل دینے کا فیصلہ،وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کمیٹی کے سربراہ ہوں گے،وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الٰہی کی زیر صدارت اعلیٰ سطح کا اجلاس ہوا جس میں صوبائی وزراء سردار محسن لغاری، سردار حسنین بہادر دریشک، چیف سیکرٹری کامران افضل، سیکرٹریز خوراک، زراعت، خزانہ، سابق صدر بینک آف پنجاب ہمیش خان اور ڈائریکٹر خوراک  نے اجلاس میں شرکت کی۔

 

بلوچستان کے کسانوں نے احتجاج کی دھمکی دیدی