• Tuesday, 29 November 2022
عدالتی سال کے آغازکی تقریب سےصدرسپریم کورٹ بارکاخطاب

عدالتی سال کے آغازکی تقریب سےصدرسپریم کورٹ بارکاخطاب

اسلام آباد(نیاٹائم)صدر سپریم کورٹ بار احسن بھون کا کہنا ہے کہ سپریم کورٹ کا 63 اے سے متعلق مقدمے کا فیصلہ آئین کے برعکس ہے۔

 

عدالتی  برس کے آغاز کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے صدر سپریم کورٹ بار احسن بھون کا کہنا تھا کہ چھٹیوں  کے باوجود سپریم کورٹ نے کیسز کی سماعت کی، چیف جسٹس کے اقدامات سے مقدمات کی تعداد میں کمی آئی  مگر اس وقت سپریم کورٹ میں ججز کی تعداد کم ہے، پانچ ججزکی تعیناتیاں نہ ہونے سے انصاف کی فراہمی کا عمل سست بھی ہوا ہے۔

 

احسن بھون کامزید کہنا تھا آئین اور جمہوریت کے خلاف سازشوں سے ملک میں بے جا انتشار  ہوا، اقتدار کی ہوس میں اعلیٰ عدلیہ کے ضبط کو بار بار آزمایا گیا۔انہوں نے عدلیہ، ججز اور ان کی فیملی کی سوشل میڈیا پر کردار کشی کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ عدلیہ کے خلاف کسی قسم کی توہین آمیز گفتگو ناقابل برداشت ہے، عدلیہ کی کردار کشی  پر نوٹس لیا جائے۔

 

صدر سپریم کورٹ بار احسن بھون کا کہنا تھا عدالت عظمیٰ کا آرٹیکل 63 اے کا فیصلہ آئین کے برعکس ہے، آرٹیکل 63 اے فیصلہ میں نظرثانی پر فل کورٹ تشکیل دیکر سماعت کی جائے اور آرٹیکل 183/3 کے مقدمات میں اپیل کا حق دینے کیلئے بھی قانون سازی کی جائے۔

 

راناثناء اللہ کی عمران خان کوگرفتارکرنےکی خواہش برقرار