• Tuesday, 29 November 2022
لاکھوں ٹن گندم خراب؛ سیلاب زدہ علاقوں میں خوراک کا بحران پیدا ہو گیا

لاکھوں ٹن گندم خراب؛ سیلاب زدہ علاقوں میں خوراک کا بحران پیدا ہو گیا

اسلام آباد(نیاٹائم)پاکستان میں فلاحی کام کرنے والے بڑے اداروں نے کہا ہے کہ سیلاب زدہ علاقوں میں خوراک کے بحران کا سامنا ہے۔

 

نجی ٹی وی کے پروگرام میں بات کرتے ہوئے الخدمت فاؤنڈیشن کے صدر عبدالشکورکا کہنا ہے کہ پی ڈی ایم اے اور این ڈی ایم اے کی تیاری جس طرح ہونی چاہیے تھی ویسی نہیں۔ صدرالخدمت فاؤنڈیشن کا کہنا تھا کہ فلاحی اداروں نے اس کمی کو دور کرنے کی پوری کوشش کی، الخدمت کے ساڑھے تین ہزار رضا کاروں نے ریسکیو میں اپنا کردار ادا کیا اور سیلاب سے متاثرہ ہماری فلاحی سرگرمیاں ابھی تک بھی جاری ہیں۔ایدھی فاؤنڈیشن کے سربراہ فیصل ایدھی کا کہنا تھا کہ بین الاقوامی ادارے بھی آئیں تو پوری مدد نہیں کر پائیں گے، گورنمنٹ آف پاکستان نے پیسے تقسیم کرنے کا آغاز کردیا ہے۔

 

فیصل ایدھی کا کہنا تھا کہ سندھ میں لاکھوں ٹن گندم خراب ہوگئی ہے جس کی وجہ سے فوڈ سکیورٹی کا ایشو کا سامنا ہے، جوبین الاقوامی امداد آئے اس کا بڑا حصہ فوڈ کی خریداری پر خرچ کرنا چاہیے۔جے ڈی سی کے ہیڈ ظفر عباس کا کہنا تھا کہ سیلاب متاثرین کے لیے روزانہ پانچ ہزار ٹرک خوراک چاہیے تاہم ٹرانسپورٹرز کہتے ہیں کہ گاڑیوں کی شدید کمی ہے۔

 

درآمدی گندم مقامی گندم کے مقابلے میں مہنگی ہونے کا انکشاف