سیلاب سے متاثرہ گھروں کیلئے مالی امداد بڑھانے کا فیصلہ

سیلاب سے متاثرہ گھروں کیلئے مالی امداد بڑھانے کا فیصلہ

ڈیرہ غازی خان(نیاٹائم)وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویزالہی کی ہدایت پرحکومت پنجاب نے سیلاب سے متاثرہ گھروں کےلئے مالی امداد ایک لاکھ روپے چارلاکھ روپے تک بڑھانے کا اعلان کردیا ہے۔

 

ڈی جی خان ڈویژن میں 25 اگست سے بارشوں کے چوتھے سپل کی بھی پیشنگوئی کردی گئی ہے کمشنرعثمان انورنے رسیکو1122 اورپی ڈی ایم اے کے ڈائریکٹرز جنرل کے ساتھ سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کرتے ہوئے صورتحال کا جائزہ لیا۔ کمشنرڈیرہ غازی خان ڈویژن محمد عثمان انور نے ڈائریکٹر جنرل ریسکیو 1122 ڈاکٹر رضوان نصیر اور  پی ڈی ایم اے کے  ڈی جی فیصل فرید کے ہمراہ سیلاب زدہ علاقوں کا دورہ کیا۔اسسٹنٹ کمشنر صدر شکیب سرور،ڈی ای او ڈاکٹر نئیر عالم اور دیگر افسران بھی ہمراہ تھے۔افسران نے بستی وڈانی،لوہار والا اور دیگر علاقوں میں ریسکیو اور ریلیف آپریشن کا جائزہ لیا۔کمشنرعثمان انور اور دیگر نے سیلاب متاثرین سے ملاقات کی۔

 

    کمشنر عثمان انور نے کہا کہ 25 اگست سے بارشوں کے چوتھے سپل کی پیشنگوئی کی گئی ہے۔سیلاب متاثرین  اپنی جان کی حفاظت کرتے ہوئے محفوظ مقامات پر منتقل ہوجائیں،سیلاب زدہ علاقوں میں انخلاء کےلئے بروقت اعلانات کرائے گئے۔سیلاب زدگان کو تنہا نہیں چھوڑیں گے۔سیلابی پانی اترنے اور راستے کلئیر ہونے پر ہر بستی، ہر گھر تک پہنچیں گے۔کمشنر نے بستی وڈانی اور دیگر آبادی محفوظ کرنے کےلئے سٹون پچنگ بارے رپورٹ بھی طلب کرلی۔ڈائریکٹر جنرل ریسکیو 1122 ڈاکٹر رضوان نصیر نے کہا کہ ڈویژنل اور ضلعی انتظامیہ کے ساتھ مکمل سپورٹ کےلئے حاضرہیں۔ ریسکیو آپریشن جاری رکھیں گے۔

 

   ڈائریکٹرجنرل پراونشل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی پنجاب فیصل فرید نے کہا کہ حکومت پنجاب کا پکے گھر کےلئے امداد ایک لاکھ سے بڑھا کر چار لاکھ روپے کرنے کا اعلان کردیا ہے۔کچے گھر کےلئے پہلے امداد نہیں تھی اب دو لاکھ روپے دئیے جائیں گے۔پی ڈی ایم اے سیلاب متاثرین کی ہر ممکن امداد کرے گی۔سیلاب متاثرین نے کہا کہ بستیوں میں اعلانات کے ساتھ انخلاء کےلئے ٹرانسپورٹ دی گئی تھے۔خیمے،تین وقت کا کھانا اور دیگر امدادی سامان فراہم  کیا جارہا ہے۔وڈور میں تاریخ کا بڑا سیلابی ریلہ دیکھا ہے،وڈور سیلابی ریلہ سے بستی وڈانی،گد پور،لوہار والا،شہانی،گانمن والا،جیون جندانی،بستی ملنگا،بستی گل محمد چانڈیہ ،بستی درہٹہ،بستی ہمدانی اور دیگر علاقے زیرآب رپورٹ ہوئے ہیں۔

 

ملیرندی میں بہہ جانےوالی کارکے4افرادکی لاشیں مل گئیں