ارشد ندیم نے جویلین تھرو میں گولڈ میڈل جیت لیا

ارشد ندیم نے جویلین تھرو میں گولڈ میڈل جیت لیا

برمنگھم(نیا ٹائم ویب ڈیسک)کامن ویلتھ گیمزمیں پاکستان کی نمائندگی کرنے والے ارشد ندیم نے جویلین تھرو میں گولڈ میڈل جیت کر قوم کا سر فخر سے بلند کردیا۔

 

انہوں نے پانچویں باری میں 90.18 میٹر کی ریکارڈ تھرو پھینک کر میڈل جیتا، وہ 90 میٹر سے لمبی تھرو کرنے والے ساوتھ ایشیا کے واحد ایتھلیٹ بن گئے۔1966 کے بعد کامن ویلتھ گیمز ایتھلیٹکس میں میڈل پاکستان کے حصے آیا جبکہ یہ 1962 کے بعد کامن ویلتھ گیمز ایتھلیٹکس میں پاکستان کا فرسٹ گولڈ میڈل ہے۔ برمنگھم میں جاری کامن ویلتھ گیمز جویلین تھرو کے فائنل کے آغاز میں پاکستان کے ارشد ندیم نے پہلی ہی باری میں ریکارڈ تھرو پھینکی۔ کامن ویلتھ گیمز کےجویلین تھرو مقابلے کے فائنل میں ارشد ندیم   میدان میں تھے جہاں انہوں نے پہلی باری میں 86.81 میٹر کی تھرو پھینکی، یہ پاکستانی ایتھلیٹ کے کیریئر کی شاندار تھرو تھی۔

 

اس سے پہلے ارشد ندیم کی اچھی تھرو 86.38 میٹر تھی۔تاہم ارشد ندیم کی دوسری باری مس ہوگئی لیکن پاکستانی ایتھلیٹ پھر بھی 86.81 کی تھرو کے ساتھ اول رہے۔ارشد ندیم نے تیسری باری میں اپنا نیشنل ریکارڈ اور بہتر کردیا، انہوں نے تھرڈ باری میں اٹھاسی میٹر کی تھرو پھینکی جبکہ چوتھی باری میں ارشد نے پچاسی عشاریہ نو میٹر کی تھرو کی۔پاکستانی ایتھلیٹ ارشد ندیم نے پانچویں باری میں نوے عشاریہ اٹھارہ میٹر کی ریکارڈ  تھرو کی۔

 

وہ 90 میٹر سے زیادہ تھرو کرنے والے پہلے جنوبی ایشین ایتھلیٹ بن گئے ہیں۔ جبکہ ان کی یہ تھرو کامن ویلتھ گیمز کا بڑا ریکارڈ ہے۔ یوں ارشد ندیم نے گولڈ میڈل جیتا۔ کامن ویلتھ گیمز 2022 میں پاکستان کا یہ سیکنڈ گولڈ میڈل ہے، ارشد ندیم نے جویلین تھرو اور نوح دستگیر بٹ نے ویٹ لفٹنگ میں سونے کا تمغہ پاکستان کے نام کیا۔پاکستان نے کامن ویلتھ گیمز میں دو سونے ،تین چاندی اور تین کانسی کے تمغے اپنے نام کیے ہیں۔

 

پی سی بی کا یو اے ای لیگ کیلئے پلیئرز کو اجازت نہ دینے کا فیصلہ