• Friday, 30 September 2022
کچرا اٹھانے والا برانڈڈ تھیلا سوشل میڈیا پر موضوع بحث بن گیا

کچرا اٹھانے والا برانڈڈ تھیلا سوشل میڈیا پر موضوع بحث بن گیا

بارسلونا(نیاٹائم)کچھ دنوں سے انسٹاگرام اور فیس بک کے صارفین کیلئے کچرا اٹھانے کا ایک برانڈڈ تھیلا موضوع بحث بنا ہوا۔

 

یہ تھیلا اسپین کے معروف فیشن برانڈ، بیلنشیاگا نے موسمِ سرما کے لیے اپنی پراڈکٹس کی مشہوری کی ہے جن میں ایک کچرے والی تھیلی کو ’ٹریش پاؤچ‘ کا خوبصورت نام دے کر اس کی قیمت 1790 ڈالر مقرر کی ہے جو پاکستانی روپوں میں 4 لاکھ 17 ہزار روپے بنتی ہے۔اس پر لوگوں کیجانب سے ملے جلے ردِ عمل کا اظہار سامنے آیا ہے، صارفین نے اسے کچرا اکٹھا کرنے والا دنیا کا مہنگا ترین تھیلا قرار دیا ہے۔ سب سے پہلے فیشن کی نیوز دینے والی ایک ویب سائٹ نے اس کی کچھ پکچرز اور پرائس پوسٹ کی تھیں۔ جس پر لوگوں نے تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہ صرف کچرا اٹھانے والا ایک تھیلا اتنا قیمتی کیونکر ہوسکتا ہے۔

 

دوسری طرف لوگوں نے ڈائر کمپنی کے باغبانی کے سامان کی طرف بھی توجہ مبذول کرائی جس کی قیمت آٹھ ہزارسات سو ڈالرتھی اوراسی طرح لوئی وائٹن کمپنی نے نوڈلز کھانے کیلئے لکڑی پرمشتمل چاپ اسٹک کا جوڑا سولہ سو ڈالر میں فروخت کیا تھا۔ویب سائٹ کے مطابق تھیلے کو ٹریش پاؤچ کا نام دیا گیا ہے اور اسے کچرا اکٹھے کرنے والا ایک لگژری بیگ قرار دیا گیا۔ یہ ایک خاتون ڈیزائنر کا شاہکار ہے۔ دوسری طرف انسٹاگرامر نے کہا ہے کہ کمپنی اختراعاتی حس سے بہت دور ہے۔ بلکہ بعض افراد نے کہا ہے کہ یہ خیال انہوں نے ایک مووی زولینڈر سے کاپی کیا ہے جس میں کپڑے اکٹھے کرنے والے خاص قیمتی بیگ دکھائے گئے تھے۔

 

باورچیوں نے ریکارڈ ساز سینڈوچ بنا لیا