ڈالر تیسرے روز بھی بے وقعت ، قدر میں بڑی کمی

ڈالر تیسرے روز بھی بے وقعت ، قدر میں بڑی کمی

کراچی (نیا ٹائم )انٹر بینک میں تیسرے روز بھی ڈالر بے وقعت رہا ، آج بھی ڈالر کی قدر میں بڑی کمی ہو گئی ، جمعات کے روز کاروبار کے آغاز میں ہی ڈالر کی قدر میں بڑی کمی ہوئی اور ڈالر کی قدر 5 روپے 79 پیسے کم ہو کر 223 روپے کی سطح تک آ گئی ۔

انٹر بینک میں دن بھر ڈالر کی قلابازیاں جاری رہیں ، کاروباری دن کے اختتام پر انٹر بینک میں ڈالر 226 روپے 15 پیسے پر بند ہوا ، آج ڈالر کی قدر میں 2 روپے 64 پیسے کی کمی ریکارڈ کی گئی ۔

واضح رہے رواں ہفتے میں اب تک ڈالر کی قدر میں مجموعی طور پر 13 روپے 22 پیسے کی کمی ہو چکی ہے ۔ گزشتہ روز ملکی تاریخ میں پہلی بار ڈالر کی قدر میں بڑی کمی ہوئی تھی ۔ پہلی بار ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر میں اس قدر اضافہ دیکھا گیا تھا ۔ گزشتہ روز ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر مجموعی طور پر 4٫19 فیصد بڑھی تھی ۔ گزشتہ روز انٹر بینک میں ڈالر 228 روپے 80 پیسے پر بند ہوا تھا ۔

دوسری جانب چیئرمین ایکسچینج ایسوسی ایشن ملک بوستان کا کہنا ہے وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کی جانب سے امپپورٹ بل کا جو دعویٰ کیا گیا تھا وہ درست ثابت ہوا ے ۔ ہمارا تجارتی خسارہ 2 ارب ڈالر تک کم ہوا ہے جو کہ بڑی رقم ہے ۔

انہوں نے کہا کہ آئی ایم ایف سے قرض جاری کروانے کیلئے آرمی چیف کی امریکا سے اپیل بھی کارگر ثآبت ہوئی ، جس کے بعد امید ہے کہ آئی ایم ایف سے قرض ملنے کے بعد ملک میں ڈالر 200 روپے تک کم ہو سکتا ہے ۔

ملک بوستان نے کہا ہے کہ ڈالر کی قدر میں روزانہ دو سے تین روپے کمی ہو رہی ہے جس کے بعد امید ہے کہ ڈالر 180 روپے تک ہو سکتا ہے جو کہ اس کا لیول ہے ۔

انہوں نے کہا کہ ملک میں سیاسی عدم استحکام ،پنجاب کے ضمنی انتخابات میں اپ سیٹ نے سب کو اپ سیٹ کر دیاتاہم اب یقین ہو رہا ہے کہ فوری انتخابات نہیں ہوں گے ۔الیکشن کمیشن کے فیصلے  کے بعد سیاسی جماعتوں نے سپریم کورٹ کا رخ کیا توسب پر واضح ہو گیا کہ فوری انتخابات کا کوئی امکان نہیں ۔

ملک بوستان نے کہا کہ لوگ پہلے خوف کا شکار تھے کہ انتخابات ہوں گے یا نہیں ، حکومت کس کی ہو گی تاہم اب صورتحال میں بہتری آنے پر سٹاک اور روپے کی قدر میں بہتری آئی ہے ۔

 

تاجروں کےلیے خوشخبری