برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نےبڑافیصلہ کرلیا

برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نےبڑافیصلہ کرلیا

لندن (نیاٹائم ویب ڈیسک) برطانوی وزیراعظم بورس جانسن نے استعفی دینے کا فیصلہ کر لیا ہے اور آئندہ چند گھنٹوں میں وہ بیان جاری کریں گے۔

 

میڈیارپورٹس کے مطابق برطانیہ میں کرس پنچر کو ڈپٹی چیف وہپ لگانے کے بورس جانسن کے فیصلے کے خلاف 47 وزرا ءاور مشیروں نے حال ہی میں استعفیٰ دیا تھا جسکے بعد اپنی ہی پارٹی کے اراکین کی طرف سے بورس جانسن پر استعفی دینے کیلئے پریشر کافی بڑھ گیا تھا۔

 

پہلے تو بورس جانسن نے صورت حال کا مقابلہ کرتے ہوئے مستعفی ہونے سے انکار کیا تھا۔برطانوی پرائم منسٹر نے کامنز لائزان کمیٹی کے سنیئر اراکین پارلیمان سے گفتگو کے دوران کہا کہ معاشی پریشر اور یوکرین جنگ کے درمیان عہدہ چھوڑ کر چلے جانا قطعی طورپر مناسب نہیں ہو گا  لیکن بعد میں صورت حال اپنے خلاف ہوتی دیکھ کر انہوں نے مستعفی ہونے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

 

واضح رہے کہ بورس جانسن کے مذکورہ سکینڈل  کاآغازاس وقت شروع ہوا جب انہوں نے کرس پنچر کی بطور جماعت رکن تقرری کی، کرس پر جنسی ہراسگی کے سنگین الزامات لگائے گئے تھے۔

 

افغانستان کے معروف "صوفی بابا " بھارت میں قتل