ٹوئٹر انتظامیہ نے بھارتی حکومت کیخلاف مقدمہ دائر کر دیا

ٹوئٹر انتظامیہ نے بھارتی حکومت کیخلاف مقدمہ دائر کر دیا

نئی دہلی (نیا ٹائم  ویب ڈیسک )ٹوئٹر انتظامیہ نے بھارتی حکومت کے خلاف مواد ہٹانے کے کچھ احکامات کو چیلنج کرتے ہوئے مقدمہ دائر کر دیا ہے ۔ ٹوئٹر انتظامیہ نے کرناٹکا ہائیکورٹ میں مقدمہ دائر کیا ہے جس میں موقف اختیار کیا گیا ہے کہ  بھارتی حکومت نے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے گزشتہ ایک سال کے دوران سوشل میڈیا پلیٹ فارم کو متعدد ٹویٹس ہٹانے کے احکامات دئیے گئے ۔

ٹوئٹر انتظامیہ کی جانب سے مقدمہ اس قت دائر کیا گیا ہے جب بھارتی حکومت اور ٹوئٹر انتظامیہ کے درمیان تنازع گزشتہ ڈیڑھ سال سے جاری تھا ۔ تاہم ٹوئٹر انتظامیہ  کی طرف سے مقدمہ کے حوالے سے بیان جاری کرنے سے گریز کیا گیا ہے ۔ بھارتی حکومت کے مواد ہٹانے کے احکامات پر بھی ٹوئٹر انتظامیہ نے جزوی عملدرآمد کیا ۔

بھارت میں گزشتہ سال انفارمیشن ٹیکنالوجی کے نئے قوانین بھی نافذ کئے گئے تھے جس کے باعث ٹوئٹر کے پاس مواد ہٹانے کے احکامات چیلنج کرنے کا اختیار نہیں رہا ۔

ٹوئٹر اور بھارتی حکومت کے درمیان تنازعہ گزشتہ سال 24 مئی 2021 ء کو سامنے آیا جب دہلی پولیس نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم کے دفاتر پر چھاپے مار کر حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی کے ترجمان کے ٹویٹس پر لگائے جانے والے لیبل کے حوالے سے تفصیلات جمع کی تھیں ۔

سوشل میڈیا پلیٹ فارم کے دفاتر پر چھاپوں کے وقت دہلی پولیس نے موقف اختیار کیا تھا کہ ان کے پاس شکایت درج کروائی گئی تھی اور ٹوئٹر انڈیا کے دفاتر میں جانے کا بنیادی مقصد تحقیقات کیلئے نوٹس جاری کرنا تھا ۔

ٹوئٹر انتظامیہ نے بھارتی پولیس کی کارروائی کو انتقامی قرار دیا تھا اور بھارت میں ٹوئٹر کے منیجنگ ڈائریکٹر نے اس موقع پر مستعفی ہونے کا بھی اعلان کیا تھا ۔

 

صحافی شیریں ابوعاقلہ کے قتل پرامریکاکامؤقف سامنے آگیا