کراچی کے جنگل سے ملنے والے شخص کا معمہ حل ہو گیا

کراچی کے جنگل سے ملنے والے شخص کا معمہ حل ہو گیا

کراچی (نیا ٹائم)شہر قائد کے علاقے ڈاکس میں مائی کلاچی روڈ سے متصل جنگل سے زخمی اور نیم بے ہوشی کی حالت میں ملنے والے شخص  کا معمہ حل ہو گیا ، جنگل سے زخمی حالت میں ملنے والا شخص مبینہ طور پر بلیک میلر نکلا ۔

پنجاب کے ضلع قصور کے علاقے پتوکی سے تعلق رکھنے والے شخص کے 4 ماہ مبینہ طور پر اغوا کئے جانے کے ڈرامے کا ڈراپ سین ہو گیا ، اغوا کا ڈرامہ کرنے والا شخص مبینہ بلیک میلر نکلا ۔ پولیس تفتیش میں ڈرامے کا ڈراپ سین ہو گیا ۔

ڈاکس پویس کے مطابق شدید زخمی حالت میں جنگل سے ملنے والا شخص پتوکی پنجاب کا رہائشی ہے ، جس نے اپنے اہلخانہ سے مل کر اپنے ہی اغوا کا ڈرامہ کیا اور مقدمہ پتوکی صدر تھانے میں مخالفین کے خلاف درج کروایا تھا ۔

پولیس رپورٹ کے مطابق زخمی شخص رمضان نے مبینہ طور پر انجکشن لگا کر خود کو بری طرح زخمی کیا اور جسم کے مختلف حصوں میں میں کٹ لگا کر ان میں کیلیں بھری ، زخمی شخص نے اپنے ہونٹ بھی سی لئے تھے ۔

رمضان نے زخمی حالت میں اپنی تصاویر اہلخانہ کو  بھجوا کر مبینہ طور پر مخالفین سے بھاری رقم بٹورنے کا منصوبہ بنایا تھا ۔ اس سلسلہ میں زخمی شخص نے اپنے معاون عارف کے ہمراہ سمندر کنارے نیٹی جیٹی سے ویڈیو بنا کر لوکیشن کے ہمراہ اہلخانہ کو بھجوائی تھیں ۔

پولیس نے زخمی شخص کے مبینہ عارف کو بھی گرفتار کر لیا ہے ۔ ڈاکو پولیس پتوکی پولیس سے بھی رابطے میں ہے اور مبینہ مغوی رمضان کو پتوکی کے حوالے کیا جائے گا ۔

پولیس کا موقف  ہے کہ خود کو شدیید زخمی کرننے والا شخص اپنی مرضی سے بلدیہ ٹاون میں دوست کے ساتھ رہائش پذیر تھا اور اس نے اپنے اغوا کا ڈرامہ رچا کر مخالفین سے پیسے بٹورنے کا منصوبہ بنایا تھا ۔

واضح رہے مذکورہ شخص نے دعویٰ کیا کہ اسے دوسری بیوی نے اغوا کر کے تشدد کا نشانہ بنایا اور اس دوران کسی جادو کرنے والے شخص نے اس کے ہونٹ بھی سی دئیے تھے اور پھر پتا نہیں چلا کہ اسے کب کراچی منتقل کیا گیا ۔ گزشتہ شب آنکھ کھلنے پر خود کو کسی جنگل میں پڑے ہوئے پایا ۔

 

فیصل آبادمیں ڈاکٹراوراسکےبیٹےکابےدردی سےقتل