سرگودھا میں ایف بی آر ملازمین کی ہڑتال چوتھے روز میں داخل

سرگودھا میں ایف بی آر ملازمین کی ہڑتال چوتھے روز میں داخل

سرگودھا(نیاٹائم) سرگودھا میں ایف بی آر دفاتر کی تالہ بندی چوتھے روز میں داخل ہو گئی  جبکہ ملازمن  کی جانب سے مطالبات کی منظوری تک ہڑتالی کیمپ جاری رکھنے کا اعلان بھی کر دیا گیا۔

 

سرگودھا میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) کے  ملازمین کی ہڑتال چوتھے روز میں داخل ہو گئی جس کے سلسلے میں  احتجاجی کیمپ میں لیگی ایم این اے چوہدری حامد حمید اور پاکستان پیپلز پارٹی کے رہنما تسنیم احمد قریشی نے  شرکت کی اور ایف بی آر ملازمین سے مذاکرات کی کوشش  کے سلسلے میں ان کے ہڑتالی کیمپ میں آئے۔رہنماؤں کی جانب سے تالہ بندی ختم کرنے کی اپیل بھی کی  گئی۔ اس موقع پر ان کا کہنا تھا کہ جس کی جتنی محنت ہو اتنا اس کو حق ملنا چاہیے  اور وزیر اعظم شہباز شریف  کو ایف بی آر ملازمین کی تمام مطالبات منظور کرنے چاہیئے۔  پاکستان مسلم لیگ ن کے ایم این اے  چوہدری حامد نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ 2015 سے بند خصوصی الاؤنسز اور دیگر مراعات کی بحالی کے لئے قومی اسمبلی میں آواز اٹھاؤں  گا۔

 

لیگی رکن قومی اسمبلی کا مزید کہنا تھا کہ  ایف بی آر ملازمین کی  ہڑتال اور دفاتر کی تالہ بندی سے ماہ جون کی کروڑوں روپے کی ٹیکس وصولیاں التوا کا شکار ہو جائیں گئیں اس لیے میں ان سے گزارش کرتاہوں کہ اپنی ہڑتال کو ختم کردیں  اور معاملات کو مل بیٹھ کر ہمارے ساتھ حل کریں ۔ ایمپلائز یونین کے صدر ملک ظفر اقبال نے کہا کہ ہزاروں ملازمین کا معاشی قتل کیا جارہا ہے اور کئی سالوں سے  ہمیں بنیادی حق سے محروم رکھا جارہا ہے۔ معیشت کا پہیہ چلانے والوں سے ایسا سلوک ناقابلے قبول ہے،ایف بی آر ملکی خزانے میں  ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتا ہے اس لیے ملازمین کے فلفور تمام مطالبات منظور کیے جائیں۔

 

 

موٹروے پولیس کی جانب سے روڈ سیفٹی سیمینار کا انعقاد