مون سون بارشیں سیلاب کا سبب بن سکتی ہیں، وفاقی وزیر کا خدشہ

مون سون بارشیں سیلاب کا سبب بن سکتی ہیں، وفاقی وزیر کا خدشہ

 کراچی(نیاٹائم)وفاقی وزیربرائے موسمیاتی تبدیلی شیری رحمان نے ملک میں 2010 جیسی خطرناک سیلابی صورتحال پیدا ہونے کے خدشے کا اظہار کردیا ہے۔

 

نیاٹائم کے مطابق وفاقی وزیربرائے موسمیاتی تبدیلی شیریں رحمان نے کہا ہے کہ کراچی، لاہور، ملتان، پشاور اور اسلام آباد سمیت بڑے شہروں میں شہری سیلاب کی خطرناک حد تک صورتحال کا سامنا کرنا پڑسکتا ہے، قدرتی آفات سے نمٹنے والے نیشنل اور صوبائی محکموں کو ممکنہ تباہ کن اثرات سے نمٹنے کا حکم جاری کردیا گیا ہے۔ پنجاب اور سندھ میں بارش روٹین سے زیادہ ہونے کی امید ہے، مون سون کی شروعات سے قبل ہی انڈیا اور بنگلہ دیش میں ہنگامی صورتحال پیدا ہوچکی ہے جبکہ پاکستان میں کم از کم اگست 2022 تک مون سون کی بارشیں جاری رہنے کا بتایا گیا ہے۔

 

وفاقی وزیر نےعندیہ دیا ہے کہ دریاؤں اورندی نالوں میں طغیانی کا بھی بہت زیادہ حدتک چانس ہے جس سے شہری ایریازکو بھی خطرات کا لاحق ہوسکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مون سون بارشوں کے متعلق کچھ پیشین گوئیاں یہ بھی ہیں کہ پاکستان کو 2010 والی سیلابی صورتحال سے دوچار ہونا پڑسکتا ہےلیکن ممکنہ سیلاب سے نمٹنے کیلئے تمام وسائل استعمال میں لائے جائیں گے۔

 

طوفانی بارشوں کے پیش نظر این ڈی ایم اے نے الرٹ جاری کر دیا