سابق وزیراعظم عمران خان کی رہائشگاہ کے باہر اساتذہ کا دھرنا جاری

سابق وزیراعظم عمران خان کی رہائشگاہ کے باہر اساتذہ کا دھرنا جاری

اسلام آباد (نیا ٹائم)سابق وزیر اعظم و چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان کی رہائش گاہ بنی گالہ کے باہر خیبرپختونخوا کے اساتذہ کا دھرنا جاری ہے ۔ مظاہرین کی جانب سے سابق وزیر اعظم کی رہائش گاہ میں داخل ہونے کی کوشش پولیس نے ناکام بنا دی ۔ اسلام آباد پولیس کی بھاری نفری سابق وزیر اعظم عمران خان کی رہائش گاہ کے باہر موجود ہے ۔

مظاہرین نے پولیس کو الٹی میٹم دیا کہ 10 منٹ میں رہائش گاہ کی طرف جانے والے راستے سے بیرئیر ہٹا دیا جائے نہیں تو اساتذہ زبردستی آگے بڑھیں گے ۔ موقع پر موجود ڈی ایس پی بارہ کہو نے کہا کہ مجسٹریٹ اور پولیس حکام مظاہرین کے ساتھ مسائل حل کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ، انہوں نے مظاہرین کو بھی یقین دہانی کروائی کہ جلد کوئی وفد آپ سے ملاقات کر کے آپ کا مسئلہ حل کروائے گا ۔

واضح رہے خیبرپختونخوا سے تعلق رکھنے والے اساتذہ نے سابق وزیر اعظم عمران خان کی رہائش گاہ بنی گالہ کے باہر دھرنا دیا ہوا ہے اور انہوں نے سابق وزیر اعظم کی رہائش گاہ کی طرف جانے والے راستے پر ٹینٹ لگا کر راستہ بند کیا ہوا ہے ۔

احتجاجی اساتذہ کا کہنا ہے کہ مطالبہ تسلیم نہ ہونے کی صورت میں  وہ خیبرپختونخوا میں پاکستان تحریک انصاف کے خلاف بھرپور تحریک چلائیں گے ۔ احتجاجی مظاہرین کا مطالبہ ہے کہ صوبے کے 58 ہزار اساتذہ کو تاریخ تقرری سے ہی مستقل کیا جائے  اور انہیں تاریخ تقرری سے سنیارٹی اور سالانہ انکریمنٹ بھی دیا جائے ۔

دوسری طرف مظاہرین نے پاکستان تحریک انصاف کی رہنما شیریں مزاری ، اعجاز چوہدری اور اسد عمر کی گاڑیاں بھی روک لیں اور انہیں سابق وزیر اعظم کی رہائش گاہ کی طرف جانے سے روک دیا ۔

اساتزہ نے پاکستان تحریک انصاف کے خلاف شدید نعرے بازی کی جس کے بعد شیریں مزاری بنی گالہ سے واپس چلی گئیں۔ اسد عمر نے مظاہرین کویقین دہانی کروائی کہ ان کے جائز مطالبہ میں ان کا ساتھ دیں گے تاہم مظاہرین نے مطالبات کی منظوری تک احتجاج اور دھرنا جاری رکھنے کا اعلان کیا ۔

 

غریب طبقے کو ریلیف دیا جائے گا، وزیرخزانہ