چیئرمین پی سی بی کی تبدیلی کے متعلق خبریں پھر سے گردش کرنے لگی

چیئرمین پی سی بی کی تبدیلی کے متعلق خبریں پھر سے گردش کرنے لگی

 کراچی(نیاٹائم)پی سی بی کے حوالے سے خاموشی بڑے طوفان کا اشارہ دینے لگی ہے چیئرمین کو ہٹانےکے حوالے سے خبروں میں ایک دفعہ پھرتیزی آگئی ہے۔

 

گورنمنٹ کی تبدیلی پرپاکستان میں زیادہ ترپی سی بی کے چیئرمین کو بھی تبدیل کیاجاتا ہے، رمیزراجہ کا تقرر پچھلے سال عمران خان نے 3 سال کیلیے کیا تھا، شہبازشریف کے وزیراعظم بننے پر نئے چیئرمین کی افواہیں آنا شروع ہوئیں، تاہم حیران کن طورپررمیزکو تبدیل نہیں کیاگیا۔ رمیزراجہ نے عمران خان کے جانے پرازخود عہدہ چھوڑنے کا اعلان کیا تھا،اس کا بھی انتظارکیاگیا لیکن وہ اپنا ذہن بدل چکے تھے، اس دوران متعدد حکومتی شخصیات کے بیانات سامنے آئے کہ بورڈ میں رد وبدل ہوگا، گذشتہ چند دن سے خاموشی تھی تاہم اب پھرسے بدلاؤ کی اطلاعات زیرگردش ہیں۔

 

ذرائع نے بتایا کہ موجودہ پی سی بی آئین کے مطابق گورنمنٹ چیئرمین کو بدل سکتی نہ ہی وزیراعظم کے پاس گورننگ بورڈ کیلیے اپنی نامزدگیاں واپس لینے کی پاور ہے،کسی تنازع سے بچنے کیلیے سیدھا ایکشن سے اجتناب کیا گیا،اس صورت میں قانونی جنگ شروع ہوسکتی ہے، لیکن اب آئین میں بعض ترامیم کے ذریعے چیئرمین کو ہٹانےکی راہ ہموار ہونے لگی ہے، وفاقی کابینہ کے آئندہ اجلاس میں اس حوالے سے گفتگو ہو سکتی ہے، اس سے سرپرست اعلیٰ کو دونوں نامزدگیاں واپس لینے کی اتھارٹی مل جائے گی۔

 

وہ گورننگ بورڈ سے رمیز راجہ اور اسد علی خان کو گھر بھیجا جاسکتا ہے، یوں نئے چیئرمین کو لانے کیلئے میدان آسان ہوجائے گا، موجودہ آئین کی شق47 کے تحت وفاقی گورنمنٹ اگر لازم سمجھے تو آئین میں کوئی بھی رد وبدل کر سکتی ہے،اس کیلئے کسی مشاورت کی ضرورت نہیں، پی سی بی ذرائع نے پوچھنے پربتایا کہ آئین گورنمنٹ نے تیار کیا، بدلاؤ کیلیے بورڈ مینجمنٹ کی رائے لینا انہی کا فیصلہ ہوگا۔

 

قومی کپتان بابر اعظم کے مداح کی انوکھی و دلچسپ خواہش