ٹک ٹاک کا فیس بک سے کوئی مقابلہ نہیں ، ٹک ٹاک انتظامیہ

ٹک ٹاک کا فیس بک سے کوئی مقابلہ نہیں ، ٹک ٹاک انتظامیہ

شنگھائی (نیا ٹائم  ویب ڈیسک)فیس بک انتظامیہ کی طرف سے ٹک ٹاک کو حریف سمجھتے ہوئے اسی کی طرح بننے کی کوششیں کی جا رہی ہیں تاہم چینی ویڈیو شیئرنگ ایپ نے حریف سوشل نیٹ ورک کو فالو نہ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔

ٹک ٹاک کے گلوبل بزنس سلوشن کے صدر بلیک چانڈل نے ایک انٹرویو میں کہا ہے کفیس بک ایک سوشل پلیٹ فارم ہے جس کیلئے انہوں نے اپنے تما الگورتھم سوشل گراف کو مد نظر رکھتے ہوئے ہی تیار کیے ہیں جو ان کی بنیاد ہے تاہم ہمارا ماڈل مختلف ہے ، ہم ایک تفریحی پلیٹ فارم مہیا کرتے ہیں جو دونوں کمپنیوں کے درمیان بڑا فرق ہے ۔

ٹک ٹاک عہدیدار کے سوشل گراف سے مراد وہ ڈیٹا ے جو انفرادی گطور پر لوگوں کے درمیان تعلقات جورنے کے حوالے سے اکٹھا کیا جاتا ہے ، انہوں نے کہا ہے کہ فیس بک ایک سوشل پلیٹ فارم جبکہ ٹک ٹاک انٹرٹینمنٹ پلیٹ فارم ہے ۔ بلیک چانڈل جو کہ خود بھی 12 سال تک فیس بک میں کام کرتے رہے اور انہوں نے 2019 میں ٹک ٹاک کا حصہ بننے کا فیصلہ کیا ۔

بلیک چانڈل کے مطابق فیس بک میں کام کرنے کے تجربے کے باعث انہیں اندازہ ہے کہ موجودہ جنگ میں کامیابی ٹک ٹاک کے نام رہے گی ۔  انہوں نے کہا کہ گوگل پلس کے قیام کے بعد بھی فیس بک میں وار رومز قائم کئے گئے مگر وقت کے ساتھ واضح ہوا کہ گوگل پلس ناکام ہو گیا ے کیونکہ گوگل کی بنیادی خاصیت ہی سرچ انجن ہے جبکہ سوشل پلیٹ فارم کے حوالے سے فیس بک کا کوئی بھی مقابلہ نہیں ۔

انہوں نے مزید وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ میں اب دوبارہ یہی کچھ دیکھ رہا ہوں ، ہم ٹک ٹاک میں لوگوں کو ثقافتی اقدار پر مبنی تفریح فراہم کرنے کی کوشش کر رہے ہیں جو کہ فیس بک میں اس وقت تک ممکن نہیں جب تک وہ کمپنی مکمل طورپر اپنی بنیاد نہ بدل دے، جس کا امکان نہیں ہے ۔

 

ایلون مسک کے خلاف خط لکھنے والے 5 ملازمین نوکری سے فارغ