سپیکر پنجاب اسمبلی نے عطا تارڑ کو اسمبلی سے نکال دیا

سپیکر پنجاب اسمبلی نے عطا تارڑ کو اسمبلی سے نکال دیا

لاہور (نیا ٹائم)سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی نے صوبائی وزیر اطلاعات عطا اللہ تارڑ کو ایوان سے نکال دیا ، عطا اللہ تارڑ کے ایوان سے جانے کے بعد پنجاب اسمبلی کا اجلاس دوبارہ شروع ہو گیا ۔

پنجاب اسمبلی کا بجٹ اجلاس کئی گھنٹے کی تاخیر کے بعد حکومت اور اپوزیشن کے مذاکرات کے بعد اجلاس شروع ہونے پر پاکستان تحریک انصاف کے رکن چوہدری ظہیر الدین نے نشاندہی کی کہ ایوان  میں ایک اجنبی گھس آیا ہے ، جسے فوری طور پر ایوان سے باہر نکالا جائے ۔

سپیکر نے چوہدرری ظہیر الدین سے پوچھا ، وہ اجنبی کون ہے ؟ جس پرانہوں نے کہا کہ عطااللہ تارڑ اجنبی ہیں وہ صوبائی اسمبلی کے رکن نہیں اس لیے وہ ایوان میں نہیں بیٹھ سکتے ۔

سپیکر پنجاب اسمبلی نے عطا اللہ تارڑ کی ایوان میں موجودگی پر رولنگ دے دی ، سپیکر پنجاب اسمبلی نے کہا کہ عطا اللہ تارڑ کو ایوان سے جانا پڑے گا ۔ جس کے بعد سپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہٰی نے عطا تارڑ کو ایوان سے نکالنے کے لیے سارجنٹ ایٹ آرمز کو طلب کر لیا اور کہا کہ بہتر ہے تارڑ صاحب کو باعزت طور پر باہر چھوڑ  آئیں۔

حکومتی اراکین عطااللہ تارڑ کے دفاع میں آگئے جس کے بعد پنجاب اسمبلی میں ہنگامہ آرائی شروع ہو گئی ۔ اپوزیشن اراکین نے ایوان میں " گو تارڑ گو " کے نعرے لگائے ۔

عطا اللہ تارڑ نے ایوان سے جانے سے انکار کر دیا ، جس پر سپیکر پنجاب اسمبلی نے ایوان کی کارروائی عارضی طور پر معطل کر دی ۔ بعدازاں عطا اللہ تارڑ ایوان سے چلے گئے اور سپیکر پنجاب اسمبلی نے اجلاس دوبارہ شروع کروایا ۔

 

پنجاب  کے سرکاری ملازمین کی "پانچوں انگلیاں گھی میں "