کے ایم سی دفتر میں ہیڈ کلرک کے قتل کا معاملہ ، سب انسپکٹر ہی ملوث نکلا

کے ایم سی دفتر میں ہیڈ کلرک کے قتل کا معاملہ ، سب انسپکٹر ہی ملوث نکلا

کراچی (نیا ٹائم) شہر قائد میں کے ایم سی کے دفتر میں ہیڈ کلرک کے قتل کیس میں اہم پیشرفت ہوئی ہے ، ہیڈ کلرک کے قتل میں کے ایم سی کا سب انسپکٹر ہی ملوث نکلا ہے ، پولیس نے ملزم کو گرفتار کر لیا ۔

چند روز قبل گارڈن جوبلی خٹک روڈ پر ڈپٹی ڈائریکٹر انسداد تجاوزات سیل ضلع جنوبی کے دفتر میں فائرنگ سے کے ایم سی کے 40 سالہ ہیڈ کلرک محمد علی لد وقار علی کے قتل کیس میں پولیس کو اہم  کامیابی حاصل ہوئی ہے ۔ ضلع سٹی پولیس نے کے ایم سی کے ہیڈ کلرک محمد علی کے قتل کے ماسٹر مائیڈ ابراہیم ٹوپی کو گرفتار کر لیا ۔

ایس ایس پی سٹی شبیر احمد سیٹھار کے مطابق ہیڈ کلرک محمد علی کے قتل کے الزام میں گرفتار ملزم ابراہیم ٹوپی بھی کے ایم سی میں سب انسپکٹر ہے ، مقتول اور ملزم کے درمیان پوسٹنگ کے حوالے سے تنازعہ چل رہا تھا ۔ ملزم ابراہیم ٹوپی نے محمد علی کو قتل کروانے کیلئے ٹارگٹ کلر شاکر ڈھیلا کو  ٹارگٹ دیا ۔

انہوں نے مزید بتایا کہ اتوار کو کے ایم سی ہیڈ کلرک محمد علی کو قتل کرنے والے ٹارگٹ کلر شاکر ڈھیلا کو بھی نیو کراچی سے گرفتار کیا گیا تھا ۔ جس کی نشاندہی پر قتل کے ماسٹر مائیڈ ابراہیم ٹوپی کو گرفتار کیا گیا ہے ۔

پولیس ذرائع کے مطابق گرفتار ملزم ابراہیم کے خلاف مزید تفتیش کی جا رہی ہے جبکہ گرفتار ملزموں کے مفرور ساتھیوں کی بھی تلاش کی جا رہی ہے ۔

واضح رہے 30 مئی کو گارڈن جوبلی خٹک روڈ پر ڈپٹی ڈائریکٹر انسداد تجاوزات سیل ضلع جنوبی کے دفتر میں نامعلوم افراد نے کے ایم سی کے 40 سالہ ہیڈ کلرک محمد علی کو فائرنگ کر کے قتل کر دیا تھا ۔ واقعہ کا مقدمہ تھانہ نبی بخش میں نامعلوم ملزموں کے خلاف درج کیا گیا تھا ۔

 

محکمہ صحت کا چھوٹا سا ملازم ، اثاثے سیاستدانوں سے بھی زیادہ