قومی اسمبلی کے بعد سینیٹ سے بھی الیکشن اصلاحات کا بل منظور

قومی اسمبلی کے بعد سینیٹ سے بھی الیکشن اصلاحات کا بل منظور

اسلام آباد(نیا ٹائم)قومی اسمبلی کے بعد سینیٹ نے بھی  نیب اور الیکشن ایکٹ ترمیمی بل اتفاق رائے سے منظور کرلیا ہے ۔

 

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی سربراہی میں سینیٹ کا اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزیر قانون اعظم نذیر تارڑ نے نیب ترمیمی  بل پیش کیا اور پاکستان مسلم لیگ ن کے سینیٹر مرتضیٰ جاوید عباسی  نے الیکشن ایکٹ ترمیمی بل پیش کیا جسے ایوان نے اتفاق رائے سے منظور کرلیا۔صادق سنجرانی نے سوال  کیا کہ الیکشن ترمیمی بل کو کمیٹی کے سپرد کروں یا ابھی پاس کرانا ہے اس پر وفاقی وزیر قانون  نے کہا کہ یہ وہ بل ہے جسے سینیٹ کمیٹی نے منظورکیا تھا، اوور سیزپاکستانیوں کے ووٹ کا حق واپس نہیں لیا گیا جبکہ  الیکشن کمیشن آف پاکستان  کوکہا ہے کہ رازداری کو مد نظر رکھ کر ووٹ کا حق ڈالنا یقینی بنائیں۔

 

اعظم نذیرتارڑ کا مزید کہنا تھا  کہ الیکشن کمیشن اس بات کو  یقینی بنائے کہ بیرون ملک پار پاکستانیوں کاووٹ  الیکشن میں ضرورکاسٹ ہو۔ایوان بالا میں دونوں بلوں  کی منظوری کے موقع پر پاکستان تحریک انصاف کے اراکین نے شدید مخالفت کی اور چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی  کے ڈائس پر آکر احتجاج کرتے ہوئے امپورٹڈ حکومت کے  خلاف نعرے لگائے۔اس موقع پر تحریک انصاف  کے شہزاد وسیم  کا کہنا تھا  کہ ہم کسی کوسمندرپارپاکستانیوں کے ووٹ کے حق پرڈاکا ڈالنے کی اجازت نہیں دیں گے اور نہ ہی ہم الیکٹرانک ووٹنگ مشین (ای وی ایم) پرسمجھوتا کریں گے۔

 

 

پاک امریکا تعلقات میں تناو کسی کے مفاد میں نہیں،بلاول بھٹو