موجودہ حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی یا نہیں ؟

موجودہ حکومت اپنی آئینی مدت پوری کرے گی یا نہیں ؟

اسلام آباد(نیا ٹائم)اتحادی حکومت نے اپنی آئینی مدت پوری کرنے اور مشکل  فیصلے لینے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

 

ذرائع کا کہنا ہے کہ گزشتہ شب ہونے والے حکومتی اتحادیوں کے اجلاس میں حکومت نے مدت پوری کرنے کیلئے مشکل فیصلے کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ذرائع کے مطابق اتحادی حکومت اس حوالے سے تذبذب کا شکار تھی کہ آیا آئینی مدت پوری کی جائے یا پھر وقت سے پہلے الیکشنز کی طرف جایا جائے تاہم  گزشتہ شب ہونے والے اجلاس میں اس حوالے سے متفقہ  طورپرفیصلہ کیا گیا کہ اگست 2023 تک حکومت  اپنی آئینی مدت پوری کی جائے گی۔دوسری طرف وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل بھی عالمی مالیاتی ادارے(آئی ایم ایف) سے پالیسی مذاکرات کیلئے  آج قطر کے  درالحکومت دوحہ روانہ ہو گئے ہیں۔

 

 قطر روانگی سے پہلے وفاقی وزیر خزانہ  کا کہنا تھا کہ میں  بین الاقوامی مالیاتی ادارے  سے کامیاب مذاکرات کے بغیر واپس نہیں آؤں گا اور انہیں اس بات پر راضی کروں گا کہ  ہم موجودہ حالات میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں  میں اضافہ  نہیں  کر سکتے۔یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے  کہ چیئرمین  پی ٹی آئی  رواں  ماہ پچس مئی کو اسلام آباد کیجانب لانگ مارچ کا اعلان  بھی کر چکے ہیں اور ان کا مطالبہ ہے کہ ہم حکومت  کا خاتمہ اور فوری الیکشنز چاہتے ہیں۔عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم نئے انتخابات کی تاریخ لیے بغیر اسلام آباد سے کسی طور واپس نہیں آئیں گے  اور اسی میں ہی ملک و قوم کی بھلائی ہے۔

 

 

تحریک انصاف کے دھرنےکامقام کیا ہوگاجانیئے!