فیس بک صارفین کو 400 ڈالرز کیوں دے گا؟

فیس بک صارفین کو 400 ڈالرز کیوں دے گا؟

الینوائے(نیا ٹائم ویب ڈیسک)امریکی ریاست اِلینوائے کے رہائشیوں کو اس ہفتے زر تلافی کی مد میں فیس بک کیجانب سے 400 ڈالرز دیے جانے متوقع ہیں۔

 

بین الاقوامی  خبر رساں ایجنسی کے مطابق سوشل میڈیا نیٹ ورک نے پچھلے سال  2015 میں درج ہونے والے کلاس ایکشن پرائیویسی کے مقدمے کو ختم کرنے کیلئےپینسٹھ کروڑ ڈالرز کی خطیر رقم کی ادائیگی کیلئے رضامندی ظاہر کی تھی۔مقدمے میں فیس بک پر الزام لگایا گیا  تھا کہ یہ صارفین کی اجازت کے بغیر ان کا بائیو میٹرک ڈیٹا اکٹھا کر رہا ہے اور اس ڈیٹا کومحفوظ بھی کر رہا ہے۔نو کروڑ پچھترلاکھ ڈالرز وکلا کی فیس اور دیگر اخراجات کو ہٹا کر بچنے والی رقم کی تقسیم اِلینوائے کے ان فیس بک صارفین کے درمیان تقسیم کی جائے گی جنہوں نے دسمبر 2020 تک دعویٰ دائر کیا تھا۔

 

امریکی ریاست اِلینوائے کے رہائشیوں  کو یہ رقم فیس بک کیجانب سے ریاست کے 2008 بائیو میٹرک انفارمیشن پرائیویسی ایکٹ کی خلاف ورزی کرنے پر دی جائے گی۔ایکٹ کے تحت صارفین کمپنیوں کیجانب سے پرائیویسی کی پامالی یعنی انگلیوں کے نشان، ریٹینا اسکین، فیشل جیو میٹری وغیرہ بغیر اجازت حاصل کرنے پر ان کے خلاف مقدمہ درج کرسکتے ہیں۔فیس بک کیجانب سے کی جانے والی رقم کی ادائیگی اِلینوائے قانون کے تحت اب تک کا سب سے بڑا تصفیہ ہے۔امریکی شہری آزادی کی یونین نے بائیو میٹرک انفارمیشن پرائیویسی ایکٹ کو یوز کرتے ہوئے نگرانی کرنے والی کمپنی  سے تصفیہ کرنے کی کوشش کی۔

 

 

بلاول بھٹو عمران خان کے دفاع میں سامنے آگئے