وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کےگرد گھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ

وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کےگرد گھیرا تنگ کرنے کا فیصلہ

لاہور (نیا ٹائم  )پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین و سابق وزیر اعظم عمران خان کی صدارت میں ہونے والے پاکستان تحریک انصاف کے اجلاس میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہبازکے خلاف آئینی آپشنز پر گھیرا مزید تنگ کیا جائے گا ۔

چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان نے پنجاب کی صورتحال پر پارٹی کی سینئر قیادت سے مشاورت کی جس میں شاہ محمود قریشی ، فواد چوہدری ، سینیٹر علی ظفر ، عثمان بزدار ، مراد راس اور سبطین خان شریک ہوئے ۔ مسلم لیگ ق کے رہنما اور سابق وفاقی وزیر مونس الہٰی نے بھی مشاورتی اجلاس میں شرکت کی ۔

اجلاس میں سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد کی صورتحال سمیت سیاسی اور آئینی آپشنز پر بات چیت کی گئی جبکہ پارلیمانی ایڈوائزری گروپ نے بھِ عمران خان کو پرویز الہٰی سے ہونے والی ملاقات سے متعلق بریفنگ دی ۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں وزیر اعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کے خلاف آئینی آپشنز استعمال کرتے ہوئے گھیرا مزید تنگ کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔ تاہم الیکشن کمیشن کے فیصلے کے بعد ہی حتمی آپشنز سامنے لانے پر اتفاق کیا گیا ۔

واضح رہے گزستہ روز سپریم کورٹ نے صدارتی آرڈیننس پر آرٹیکل 63 اے کا فیصلہ سنایا ہے ۔ عدالتی فیصلے میں کہا گیا کہ کسی بھی منحرف رکن اسمبلی کا ووٹ شمار نہیں کیا جائے گا ۔ پارٹی پالیسی سے انحراف کرنے والے رکن کو تاحیات نااہل کیا جائے گایا خاص مدت کیلئے نااہلی کا سامنا ہو گا ۔ اس پرپارلیمنٹ قانون سازی کرے ۔  آرٹیکل 63 اے  پارلیمانی نظام میں سیاسی جماعتوں کو بھی تحفظ فراہم کرتا ہے ۔ پارٹی سے انحراف کینسر ہے جو سیاسی جماعتوں کے ساتھ سیاسی نظام کیلئے بھی نقصان دہ ہے ۔ سیاسی جماعتوں کے حقوق کا تحفظ کسی بھی رکن کے حقوق سے بالاتر ہے ۔

 

بلوچستان اسمبلی میں ایک اور وزیر اعلیٰ کو تحریک عدم اعتماد کا سامنا