بلوچستان اسمبلی میں ایک اور وزیر اعلیٰ کو تحریک عدم اعتماد کا سامنا

بلوچستان اسمبلی میں ایک اور وزیر اعلیٰ کو تحریک عدم اعتماد کا سامنا

کوئٹہ (نیا ٹائم ) بلوچستان اسمبل میں ایک اور وزیر اعلیٰ کے خلاف تحریک عدم اعتماد جمع کروا دی گئی ، وزیر اعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجو کے خلاف تحریک جمع کروائی گئی ۔

وزیر اعلیٰ بلوچستان عبدالقدوس بزنجو کے خلاف تحریک عدم اعتماد اسمبلی کے سیکرٹریٹ میں جمع کروائی گئی ہے ۔ تحریک عدم اعتماد پر 14 اراکین اسمبلی کے دستخط موجود ہیں ۔ عوامی نیشنل پارٹی کے اراکین جام کمال ، ظہور بلیدی ، عارف محمد حسنی ، سلیم کھوسہ ، نوابزادہ طارق مگسی ، مٹھا خان کاکڑ اور سرفراز ڈومکی نے تحریک عدم اعتماد پ دستخط کئے ہیں ۔

تحریک عدم اعتماد پر عوامی نیشنل پارٹی کے اصغر اچکزئی ، نعیم بازئی اور شاہین کاکڑ جبکہ پاکستان تحریک انصاف کے رکن اسمبلی سردار یار محمد  رند ، بی بی فریدہ ، نعمت زہری اور مبین خلجی نے بھی دستخط کئے ہیں ۔

واضح رہے اس سے قبل بلوچستان عوامی پارٹی سے تعلق رکھنے والے وزیر اعلیٰ بلوچستان جام کمال کے خلاف بھی تحریک عدم اعتماد لائی گئی تھی ۔ تحریک عدم اعتماد کامیاب ہونے سے قبل ہی جام کمال نے اپنے عہدے سے استعفیٰ دے دیا تھا جبکہ سپیکر بلوچستان اسمبلی میر عبدالقدوس بزنجو نے سپیکر بلوچستان اسمبلی سے استعفیٰ دینے کے بعد وزیر اعلیٰ بلوچستان کا عہدہ سنبھالا تھا ۔ ان کا اقتدار بمشکل 6 ماہ ہی چل سکا ہے اور ان کے خلاف بھی تحریک عدم اعتماد پیش کر دی گئی ہے ۔

 

عمران خان نےپارٹی قیادت کو طلب کرلیا