فوری الیکشن میں جانا ہے یا نہیں، کابینہ نے واضح کردیا

فوری الیکشن میں جانا ہے یا نہیں، کابینہ نے واضح کردیا

اسلام آباد(نیاٹائم)وزیراعظم شہبازشریف کی زیرصدارت موجودہ صورتحال کا جائزہ لینے کیلئے کابینہ کا اجلاس بلایا گیا جس میں وفاقی کابینہ نے اصلاحات کے بغیرفوری الیکشن کروانے کی شدید مخالفت کردی۔

 

وفاقی کابینہ نے اصلاحات کے بغیرفوری انتخابات میں جانے کی مخالفت کی ہے کابینہ نے ریٹائرمنٹ ڈائریکٹری رپورٹ کو بھی تسلیم نہیں کیا ہے۔ کابینہ کی طرف سے بتایا گیا کہ ملک کی بہتری کے لیے سخت فیصلے لازم ہوچکے ہیں، غریب عوام کوریلیف فراہم کیا جائے اور امیرطبقہ پسے ہوئے طبقے کے تعاون کیلئے فرنٹ لائن پرآئے۔

 

کابینہ نے معاشی بحران سے نجات کیلئے سخت فیصلے کرنے کا کہا اوراتفاق کیا کہ ہم کو وقت ضائع کیے بغیرغریب آدمی کی فکر کرنی چاہیے۔ کابینہ نے کراچی میں دہشت گردی کے واقعات پراظہارتشویش کیا اور وزیراعظم کی طرف سے وفاقی وزیرداخلہ رانا ثناءاللہ کو سندھ گورنمنٹ سے مل کرامن وامان کے لیے تمام تراقدامات اٹھانے کا حکم دیا۔

 

اس کےعلاوہ آئی ٹی کےشعبے کی برآمدات دوسال میں بڑھانے کے احکامات اور برآمدات بڑھانے کے حوالے سے وزارت آئی ٹی کی سفارشات منظورکی گئی۔پاکستان کی 75 ویں سالگرہ کے موقع پریادگاری نوٹ چھاپنے کی اسٹیٹ بنک کی سمری رد کی گئی  کیوں کہ ان یادگاری نوٹوں کے چھاپنے پر 6.64 ملین ڈالر کا خرچہ ہوگا اوریادگاری کرنسی نوٹ غیرملکی کمپنی پرنٹ کریں گی۔

 

وزیراعظم کا اس موقع پرکہنا تھا کہ ملک شدید معاشی بحران سے دوچارہے اوراس صورتحال میں اتنے بھاری اخراجات برداشت نہیں کرسکتے، بدترین معاشی بحران میں ملک فضول خرچی میں نہیں جاسکتا اور75ویں سالگرہ پرموجودہ کرنسی نوٹوں کا ڈیزائن بدل کرہی کام جاری رکھا جائے۔

 

گرفتاری سے بچنے کیلئے حفیظ شیخ عدالت پہنچ گئے