وزیراعظم کے معاون خصوصی پرپابندی

وزیراعظم کے معاون خصوصی پرپابندی

اسلام آباد(نیاٹائم)چیف جسٹس اسلام آباد ہائیکورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے وزیر اعظم کے معاون خصوصی حنیف عباسی کو پبلک آفس ہولڈ کرنے پرتاحکم ثانی پابندی عائدکردی ۔

 

اسلام آباد ہائیکورٹ میں شیخ رشید کی جانب سے وزیراعظم کے معاون خصوصی حنیف عباسی کیخلاف دائردرخواست پر سماعت ہوئی، چیف جسٹس اطہر من اللہ نے نے درخواست پر سماعت کرتے ہوئے ریمارکس دیےکہ امیدہے حنیف عباسی آئندہ سماعت تک عوامی عہدہ استعمال نہیں کریں گے ،حنیف عباسی کو عوامی عہدہ برقراررکھنےسے فی الحال روک رہے ہیں، جس پر حنیف عباسی کے وکیل احسن بھون نے دلائل دیتے ہوئےکہا کہ معاون خصوصی بپلک آفس نہیں ہے ، حنیف عباسی کوکام سے نہ روکیں، اگر ایسا حکم جاری کر دیا گیا تو یہ حتمی فیصلےکی مانند ہی ہوگا۔

 

احسن بھون کے دلائل پر چیف جسٹس اطہر من اللہ کا کہنا تھا کہ آئین کےمطابق سزایافتہ شخص پبلک آفس ہولڈ نہیں کر سکتا، اگر بطور معاون حنیف عباسی نے وزیر اعظم کو کوئی مشورہ دینا ہے تو اس ضمن میں انہیں کوئی نوٹیفکیشن کے ذریعے عہدہ لینے کی ضرورت نہیں وہ بغیر کسی نوٹیفکیشن یاعہدے کے بھی وزیر اعظم کومفید مشورہ دے سکتے ہیں، عدالت نے فریقین کے دلائل سننے کےبعد کیس کی سماعت 27مئی تک ملتوی کر دی ۔

 

ڈالر ڈبل سنچری کے قریب پہنچ گیا