ہراسمنٹ ثابت ہونے پر پاکستانی سفارتخانے کا ملازم نوکری سے برخاست

ہراسمنٹ ثابت ہونے پر پاکستانی سفارتخانے کا ملازم نوکری سے برخاست

اسلام آباد (نیا ٹائم  )اٹلی میں پاکستانی سفارتخانے کے ہیڈ آف مشن کے خلاف ہراسمنٹ کے الزامات ثابت ہونے رپ وفاقی محتسب برائے انسداد ہراسیت نے نوکری سے برخاست کرنے کا فیصلہ سنا دیا ۔

انسداد ہراسیت محتسب  کے فیصلے کے مطابق اٹلی میں پاکستانی ہیڈ آف مشن ندیم ریاض کے خلاف وزارت کامرس کی گریڈ 20 کی افسر سائرہ امداد نے الزام عائد کیا کہ انہیں کام کی جگہ پر ہراساں کیا گیا ہے ۔ الزامات ثابت ہونے پر انسداد ہراسیت محتسب نے فیصلے میں کہا کہ ہیڈ آف مشن ندیم ریاض کو 50 لاکھ روپے جرمانے کی بھی سزا دی جاتی ہے جو وہ شکایت کنندہ خاتون کو بطور معاوضہ دیں گے ۔

محتسب نے فیصلے میں کہا ہے کہ 7 روز کے اندر فیصلے پر عملدرآمد کیلئے کاپی وزارت خارجہ کو بھجوائے جائے ۔ وزارت کامرس کی افسر سائرہ امداد نے انسداد ہراسیت محتسب کو درخواست دی تھی کہ ندیم ریاض نے 4 برس قبل 2018 ئ میں انہیں ہراساں کیا تھا ۔

شکایت کنندہ افسر نے موقف اختیار کیا تھا کہ جب وہ اٹلی کے پاکستانی مشن میں تعینات تھیں تو اس وقت ان کے ہیڈ آف مشن ندیم ریاض نےانہیں ایسے ممالک کے ایسے شہروں کے دورے کے لیے کہا جو ان کی ملازمت سے متعلق نہ تھے ۔ جبکہ ان دوروں کے دوران ہیڈ آف مشن نے مجبور کیا کہ مذکورہ افسر اپنی رہائش ان کے قریب رکھیں ۔

شکایت کنندہ نے یہ بھی الزام لگایا تھا کہ ندیم ریاض نے خاتون افسر کو روزانہ کی بنیاد پر اپنی کہانیاں سننے پر بھی مجبور کیا ۔ جن کی زبان بھی نہایت قابل اعتراض تھی ۔

 

عدالت نے 11سالہ بچی سے اجتماعی زیادتی کے ملزموں کوسزا سنا دی