بجلی کا بحران شدید ، لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 14 گھنٹے تک پہنچ گیا

بجلی کا بحران شدید ، لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 14 گھنٹے تک پہنچ گیا

اسلام آباد (نیا ٹائم  )ملک میں جاری بجلی کا بحران شدت اختیار کر گیا ، شہر قائد میں لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ 6 سے 14 گھنٹوں تک پہنچ گیا ۔

شہر قائد میں لوڈ شیڈنگ شدید ہو گیا ، دن رات لگاتار بجلی کی بندش کا سلسلہ جاری ہے ، کے الیکٹرک کے غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ نہ کرنے کے دعوے بھی دھرے رہ گئے ۔ شدید گرمی میں دن اور رات کے اوقات میں جاری لوڈ شیڈنگ سے شہر بلبلا اٹھے ۔

کراچی کے علاوہ اندرون سندھ کے علاقے حیدر آباد ، لاڑکانہ ، سمیت دیگر کئی شہر بھی لوڈ شیڈنگ سے متاثر ہیں ۔

دوسری طرف گرمی کی شدت میں اضافے کے ساتھ ہی لاہور سمیت پنجاب بھر میں بجلی کی طلب میں اضافہ ہو تے ہی لوڈ شیڈنگ کا دورانیہ بھی بڑھ گیا ہے ۔2 سے 3 گھنٹے کی بندش کے ساتھ ساتھ وقفے وقفے سے بجلی کی ٹرپنگ کا سلسلہ بھی جاری ہے ۔ طلب کے ساتھ ہی لیسکو کے بجلی کے کوٹے میں بھی 2 سو میگا واٹ کا اضافہ کر دیا گیا ہے ۔

لیسکو حکام کے مطابق بجلی کی طلب 4 ہزار 500 میگا واٹ ہے اور انہیں اتنی ہی بجلی دی جا رہی ہے ۔ دوپہر کے اوقات میں بجلی کی طلب 5 ہزار میگا واٹ ہونے کا امکان ہے ۔ جس کے باعث دوپہر کے وقت لوڈ شیڈنگ کی جا سکتی ہے ۔

لیسکو حکام کے مطابق شہر میں صرف ایک گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے جبکہ دیہاتی علاقوں میں 2 گھنٹے کی لوڈ شیڈنگ ہو رہی ہے ۔

پیسکو کی حدود میں پشاور کے شہری علاقوں میں 6 گھنٹے جبکہ دیہی علاقوں میں 16 گھنٹے تک کی لوڈ شیڈنگ جاری ہے ۔ پاکستان تحریک انصاف کے رکن صوبائی اسمبلی فضل الہٰی نے پشاور کے رحمان بابا گرڈ سٹیشن میں گھس کر گرڈ سٹیشن بند کروا دیا ۔

فضل الہٰی نے کہا کہ واپڈا حکام غیر اعلانیہ لوڈ شیڈنگ سے عوام کو پریشان کر رہے ہیں ، عوام کو ریلیف دینے کیلئے خود گرڈ سٹیشن جا کر بجلی بحال کرنا پڑی ۔انہوں نے کہا کہ خیبرپختونخوا کے عوام کو عمران خان سے محبت کی سزا دی جا رہی ہے ۔

 

شریف خاندان نے چینی کی قیمتوں پر بڑا اعلان کر دیا