ملیشئین موٹربائیکرزکا کےپی کے، کے سیاحتی مقامات کی جانب ریلی کاآغاز

ملیشئین موٹربائیکرزکا کےپی کے، کے سیاحتی مقامات کی جانب ریلی کاآغاز

 پشاور(نیاٹائم)خیبرپختونخوا کلچراینڈٹورازم اتھارٹی، سیاح اورایپو بائیکرز کلب ملیشیاء کے تعاون سے ملیشیئن بائیکرزریلی اسلام آباد سے سوات پہنچ گئی، دیگر سیاحتی مقامات کا رخ بھی کریگی۔ 

 

خیبرپختونخوا کلچراینڈٹورازم اتھارٹی، سیاح اور ایپو (آئی پی او ایچ) بائیکرز کلب ملیشیاء کے باہمی اشتراک سے 22 ملیشیئن بائیکرز پر مشتمل ریلی کا آغاز ہو گیا۔ ریلی اسلام آباد سے شروع ہوئی اور پہلے مرحلے میں سوات کے مقام فضا گٹ پر قیام کیا۔ ریلی میں ملیشیاء سے آئے ہوئے بائیکرز ہندوکش، قراقرم اور ہمالیہ کے پہاڑی سلسلے سے ہوتے ہوئے تقریباً 1950 کلومیٹر کا سفرتہہ کرینگے۔ ریلی کے شرکاء خیبرپختونخوا کے مختلف سیاحتی مقامات کی سیر وتفریح سمیت یہاں قیام بھی کرینگے۔

 

 ریلی سوات سے ہوتی ہوئی دیر لوئر، دیر اپر، لواری ٹاپ اور چترال پہنچے گی۔ جس کے بعد شرکاء اگلے روز چترال سے وادی کیلاش میں شروع چلم جوش تہوار میں شرکت کرینگے جبکہ اس کے بعد ریلی گرم چشمہ، قاقلشت میڈوز اور شندور پاس پہنچے گی۔ ریلی میں شریک ملیشیئن بائیکرز شندورکے مقام پر بھی قیام کرینگے جس کے بعد ریلی ہندرب، پھنڈر اور گلگت بلتستان جائینگے۔ ریلی کے انعقاد کا مقصد خیبرپختونخوا کے سیاحتی مقامات کو دنیا میں رونما کرانے سمیت ایڈونچر ٹورازم کو فروغ دینا ہے۔

 

  بائیکرازلان بن محمد نےکہاکہ کے پی کے کے سیاحتی مقامات کا بائیک پرسفر انتہائی شاندار ہے۔ لوگ مہمان نوازہیں جنہوں نے جگہ جگہ ہمارا استقبال کیااور خوش آمدید کہا۔ میں اپنی آمد کے بعد یہاں خود کو بہت محفوظ محسوس کررہا ہوں۔ میرا دیگر لوگوں سے بھی مشورہ ہے کہ وہ پاکستان کا رخ کریں یہاں حسین قدرتی مناظراورمقامات کیساتھ ساتھ یہاں کے لوگ مہمان نوازاورمحبت والے ہیں۔ بائیکر وزی بن عبدالحمید نے کہاکہ کے پی کے سفر کیساتھ ساتھ یہاں کے کھانے پینے بہت لذیز ہیں۔ میں کے پی کےکلچراینڈٹورازم اتھارٹی، سیاح اور پولیس کا شکرگزارہوں جنہوں نے بہترین اقدامات کئے اورہمیں سہولیات فراہم کیں۔

 

عظیم جنگجو خوشحال خان خٹک کے مجسمے کی بے توقیری