جامعہ کراچی میں طالبعلم پرتشدد کا معاملہ، وزیر جامعات کا نوٹس

جامعہ کراچی میں طالبعلم پرتشدد کا معاملہ، وزیر جامعات کا نوٹس

کراچی(نیاٹائم)جامعہ کراچی میں رینجرزسیکیورٹی اہلکارکا طالب علم کوتشدد کا نشانہ بنانے پر وزیرجامعات سندھ اسماعیل راہو نے انکوائری کے احکامات جاری کردیے۔

 

اسماعیل راہو نے سیکریٹری یونیورسٹیز اور وائس چانسلر جامعہ کراچی سے رپورٹ طلب کرتے ہوئے کہا کہ جامعہ کراچی میں چیکنگ کے نام پر کسی پرتشدد کی اجازت نہیں دے سکتے،دہشت گردی کی تازہ لہرکے باعث ہم غیر معمولی صورتحال کا شکار ہیں، نئےحالات میں سیکیورٹی کو یقینی بنانے کے لیے غیررواجی اقدامات ضروری ہوگئے اوران کو کامیاب بنانے کے لیے یونیورسٹی سے متعلقہ افراد کا ایک دوسرے کے ساتھ تعاون اوراعتماد درکار ہے۔وزیرجامعات نے یقین دلایا کہ منتظمین،اساتذہ، طلبہ و طالبات اور ملازمین کے نمائندے مشاورت سے مسائل سلجھا لیں گئے۔

 

خیال رہے کہ حالیہ ہفتے جامعہ کراچی میں رینجرز کی طرف سے طلبہ سے مارپیٹ کرنے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی تھی۔ ویڈیو میں طلبہ اور سیکورٹی اہلکاروں کے مابین تلخ کلامی اور تشدد کا عنصربھی دیکھا گیا تھا۔جامعہ کراچی میں گزشتہ ماہ ہونے والے خودکش دھماکے کے بعد طلبہ کی ذاتی سواریوں کو باہر روکا جاتا ہے اورطلبہ کی موٹرسائیکل مرکزی دروازے کے باہر پارک کروائی جارہی ہے۔

 

تعلیمی ادارے کتنے ماہ بندرہیں گے، طالب علموں کی من پسند خبرآگئی