گرمی نے کراچی میں ڈیرے ڈال لیے

گرمی نے کراچی میں ڈیرے ڈال لیے

کراچی(نیاٹائم)ہفتہ 14 مئی کی دوپہر درجہ حرارت اکتالیس ڈگری تک پہنچ گیا، جبکہ شہرمیں سمندری ہوائیں بند ہونے کے باعث گرمی کی شدت میں مزید اضافہ ہوا ہے۔

 

قومی ادارہ صحت نے کراچی میں ہیٹ اسٹروک کے پیش نظرایڈوائزری ایشو کردی ہے۔ متعلقہ اداروں کو ہیٹ اسٹروک کی روک تھام کے متعلق بروقت اور مناسب اقدامات کا حکم جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ ہیٹ اسٹروک ایسی طبی صورتحال ہے جس کا بروقت مناسب علاج نہ کیا جائے تو یہ جان لیوا بن سکتی ہے۔

 

 خشک،گرم اورسرخ جلد، پسینے کا نہ آنا،بے ہوش ہوجانا،متلی یا الٹی، کمزوری یا سستی، بخار، سردرد اور دل کی دھڑکن کا تیزہوناہیٹ اسٹروک کی علامات  ہے، ہیٹ اسٹروک اعضاء پربھی اثراندازہوسکتا ہے یا معذوری کی وجہ بن سکتا ہے۔شیر خوار،65 برس سے زائد عمر کے افراد، ذیابیطس اور ہائی بلڈ پریشر کے مریض،ایتھلیٹس اورآؤٹ ڈورکام کرنیوالے ورکرز کیلئے ہیٹ اسٹروک زیادہ خطرناک ہوتا ہے۔

 

قومی ادارہ صحت نے احکامات دیے ہیں کہ گرم موسم میں زیادہ پانی کا استعمال کریں اورزیادہ درجہ حرارت والی جگہوں پر براہ راست سورج کی روشنی میں جانے سے اجتناب کریں،سرکو ٹوپی سے ڈھانپیں اورہلکے رنگ کے ڈھیلے کپڑے زیب تن کریں،براہ راست سورج کی روشنی میں کام کرنے والے افراد کو وافر مقدار میں پانی کا استعمال کرنا کا مشورہ دیا گیا ہے۔

 

میٹ آفس کے مطابق کراچی میں آج بروز ہفتہ 14 مئی کو بھی گرمی اپنے جوبن پر رہے گی۔ سمندری ہوائیں معطل ہونےکے باعث گرمی کا زور باقی رہے گا۔ آج صبح کے وقت میں کراچی کا کم سے کم درجہ حرارت 28.7 ڈگری سینٹی گریڈ ریکارڈ رہا۔شہر کی ہوا میں نمی کی شرح 66 فیصد، جبکہ گرم ہوائیں شمال مغرب سے بارہ کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چل رہی ہیں۔ ادارے کے مطابق کراچی میں فی الحال بارش کا کوئی چانس نہیں۔

 

گرمی نے ملک کے مختلف علاقوں کو اپنی لپیٹ میں لے لیا