پشاور کور سے متعلق سیاستدانوں کے بیانات ، آئی ایس پی آر کا سخت جواب

پشاور کور سے متعلق سیاستدانوں کے بیانات ، آئی ایس پی آر کا سخت جواب

راولپنڈی  (نیا ٹائم  )پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ کا کہنا ہے کہ کور کمانڈر پشاور سے متعلق حالیہ دنوں میں سینئر سیاستدانوں کی طرف سے دئیے گئے بیانات انتہائی نا مناسب ہیں ۔ سیاستدانوں کے ایسے بیانات سے سپاہ اور قیادت کا مورال اور وقار پر منفی اثرات پڑتے ہیں ۔

آئی ایس پی آر کا کہنا ہے کہ سینئر سیاستدانوں سے توقع کی جاتی ہے کہ وہ ادارے کے خلاف ایسے متنازع بیانات دینے سے آئندہ گریز کریں ۔

آئی ایس پی آر نے وضاحت کی ہے کہ پشاور کور پاکستانی آرمی کی ممتاز فارمیشن ہے جو گزشتہ دو دہائیوں سے دہشت گردی جیسے خطرات کے خلاف جنگ میں پاکستانی فوج کا ہراول دستے کے طور پر کام کر  رہی ہے ۔ اس اہم کور کی قیادت بھی ہمیشہ بہترین پروفیشنل صلاحیتیں رکھنے والے ہاتھوں میں ہی سونپی گئی ۔

ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ افواج پاکستان کے بہادر سپاہی اور افسران ہمیشہ ہی وطن کی خود مختاری اور سالمیت کےاپنی جانیں دینے کو تیار رہتے ہیں ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ کچھ روز سے سیاسی لیڈر شپ کی طرف سے انتہائی نامناسب بیانات دئیے جا رہے ہیں ۔اس سے قبل بھی کئی باردرخواست کی گئی ہے کہ فوج کو بلاوجہ سیاست میں نہ گھسیٹا جائے ۔ فوج کا سیاست سے کچھ لینا دینا نہیں ہے اور ہماری تمام تر توجہ پروفیشنل ذمہ داریوں پر مرکوز ہے ۔

ڈی جی آئی ایس پی آر نے وضاحت کی کہ آرمی چیف کی تقرری کا طریقہ کار آئین میں واضح ہے ، آئین و قانون کے تحت ہی آرمی چیف کی تقرری ہو گی بلاوجہ اس اہم عہدے پر بحث کرنا اور معاملے کو متنازع بنانا نامناسب ہے ۔

ترجمان پاک فوج نے مزید کہا کہ فوج کو الیکشن کروانے کی دعوت دینا بھی مناسب بات نہیں ہے کیونکہ یہ ایک سیاسی مسئلہ ہے اور پاکستان کے قانون میں فوج کو سیاست سے دور رہنے کا ہی کہا گیا ہے ۔

 

صدرمملکت کاخط بنام چیف جسٹس