روسی صدر کو اسرائیل سے معافی کی ضرورت کیوں پیش آئی

روسی صدر کو اسرائیل سے معافی کی ضرورت کیوں پیش آئی

ماسکو(نیا ٹائم ویب ڈیسک) روسی صدر ولادیمیر پیوٹن نے یہودیوں سےمتعلق  اپنے وزیرخارجہ کے بیان پراسرائیل سے معافی مانگ لی ہے۔

 

 روس کے وزیرخارجہ سرگئی لاوروف نے یوکرینی صدرولادیمیر زیلنسکی کا حوالہ دیتے ہوئے کہا تھا کہ ایڈولف ہٹلر کی رگوں میں بھی یہودی خون تھا۔روسی وزیر خارجہ  کا کہنا تھا کہ سمجھدار یہودی لوگ کہتے ہیں کہ سامی النسل یہودیوں کیخلاف سب سے زیادہ پرجوش خود یہودی ہی ہوتے ہیں لیکن  اب روسی  صدر پیوٹن نے یہودیوں سےمتعلق سرگئی لاوروف کے بیان پر اسرائیل سے معذرت لر لی ہے۔ولادیمیر پیوٹن کا مزید کہنا تھا کہ میں اپنے وزیر خارجہ کی جانب سے دیے گئے بیان پر اسرائیل سے معافی کا طلبگارہوں۔

 

خیال رہے کہ گزشتہ ہفتے روس کے  وزیر خارجہ سرگئی لاوروف نے اسرائیل پرشدید برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ان پر یہود دشمنی کے جذبات پھیلانے کے الزامات لگائے تھے۔روسی وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ ایڈولف ہٹلر بھی یہودیوں سے تعلق رکھتا تھا اسی لیے انکی بات کا کوئی مطلب نہیں ہے۔سرگئی لاوروف نے مترجم کے ذریعے بات کرتے ہوئے کہا کہ اب تو کافی دیر سے ہم عقل مند یہودی عوام  کو یہ کہتے ہوئے بھی سن رہے ہیں کہ یہود یو ں کے سب سے بڑے مخالف خود یہودی ہی  ہیں۔

 

 

پاک چین دوستی دل کی گہرائیوں میں بستی ہے:چین