ایلون مسک کی پیشکش پرٹویٹرکاایک مرتبہ پھرغور

ایلون مسک کی پیشکش پرٹویٹرکاایک مرتبہ پھرغور

امریکا(نیاٹائم ویب ڈیسک)ٹویٹر کی جانب سے ایلون مسک کی طرف سے کمپنی کو خریدنے اور اسے پرائیویٹ کرنے کی پیش کش کا دوبارہ جائزہ لیا گیا ہے۔وال سٹریٹ جرنل کی رپورٹ کے مطابق دونوں اطراف کی میٹنگ میں دنیا کے امیر ترین شخص کی طرف سے کی گئی پیش کش پر گفتگو کی گئی۔

 

ایلون مسک کی طرف سے سماجی رابطے کے نیٹ ورک کے ایک شیئر کی قیمت 54.20 ڈالر لگائی گئی تھی اور مجموعی طور پر وہ ٹویٹر کو 43 ارب ڈالرز میں خریدنے کی پیش کش کرچکے ہیں۔ٹیسلا، سپیس ایکس اور کئی دیگر کمپنیوں کے مالک ایلون مسک پہلے ہی ٹویٹر کے 9 فی صد سے زیادہ شیئر خرید چکے ہیں۔اس سے پہلے ٹوئٹر کی طرف سے اس پیش کش پر سٹاک مارکیٹ میں اپنے شیئرز کی فروخت روکنے کیلئے امریکی قانون کے مطابق شیئرز ہولڈز کا تحفظ کرنے والے بل کو اپنا لیا، جسکے بعد کمپنی کے شیئرز کو خریدا نہیں جا سکتا۔

 

اب وال سٹریٹ جرنل نے اپنی رپورٹ میں کہا ہے کہ ٹویٹر کی طرف سے پیشکش کو مسترد کیے جانے کا امکان زیادہ ہے اور اس حوالے سے جاری ہفتے سہ ماہی رپورٹ کے موقع پر بھی  گفتگو کی جائے گی۔اگرچہ لازمی نہیں کہ ٹویٹر کی طرف سے اس پیشکش کو قبول کیا جائے تاہم اس سے عندیہ ملتا ہے کہ زیادہ پرکشش پیش کش کرکے ایلون مسک کمپنی کو خرید بھی سکتے ہیں۔

 

ایلون مسک 5 اپریل 2022 کو ٹویٹرکے بورڈ آف ڈائریکٹرز میں بھی شامل ہوئے تھے، کیوں کہ اس سے 2 روزپہلے انہوں نے کمپنی کے 10 فی صد کے قریب شیئرز خریدیں اور وہ اس وقت بھی ٹویٹر کے سب سے بڑے شیئر ہولڈر ہیں۔ایلون مسک پچھلے  کچھ مہینوں  سے ٹوئٹر پر سب سے زیادہ تنقید کرتے آ رہے ہیں اور لوگ بھی ان سے ٹویٹر کے مقابلے نیا سوشل میڈیا پلیٹ فارم لانے کی ڈیمانڈ کرتے رہے ہیں۔

 

ایلون مسک نے اس بات کااشارہ  بھی دیا تھا کہ وہ سوشل میڈیا پلیٹ فارم متعارف کروا سکتے ہیں اور اب انہوں نے ٹویٹرکو خریدنے کی خواہش کا اظہار کرکے ٹویٹر کے شیئر ہولڈرز اور بورڈ آف ڈائریکٹر کو بھی کنفیوز کر دیا۔ایلون مسک ٹویٹر پر بڑے پیمانے پر تبدیلیوں کے خواہشمند ہیں، وہ ٹویٹر کو سیاسی جانبدار پلیٹ فارم کہتےرہے ہیں۔

 

کن موبائل فونزپروٹس ایپ سروس بندہوگی،خبرآگئی