سپریم کورٹ کے فیصلوں کا پارلیمنٹ میں آنا غلط روایت،فواد چوہدری

سپریم کورٹ کے فیصلوں کا پارلیمنٹ میں آنا غلط روایت،فواد چوہدری

 اسلام آباد(نیا ٹائم)پاکستان تحریک انصاف کے رہنما فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ حکومت بدلنے کے لیے تحریک عدم اعتماد ایک انٹرنیشنل سازش تھی۔ 

 

سپریم کورٹ آف پاکستان کے باہر  میڈیا نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چوہدری کا  کہنا تھا کہ حکومت بدلنے کیلئے عدم اعتماد  کی تحریک ایک بیرونی سازش  تھی  اور یہ ایک بد ترین سامراج کی پاکستان پر قبضے کی کوشش ہےجبکہ آج اگر عدالت عظمی کے فیصلے پارلیمان میں آ جائیں تو یہ غلط  بات ہوگی۔ملکی استحکام کا واحد حل صرف اور صرف نئے انتخابات  ہیں۔سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ جہاں تک سپیکر اسمبلی کی رولنگ کا تعلق ہے تو اس کیلئے آپ کو سپیکر کے سامنے جو مواد تھا وہ دیکھنا ہوگا جبکہ ہم نے نیشنل سکیورٹی کونسل کے تمام میٹنگ  منٹس بھی عدالت عظمی میں پیش کر دیے ہیں ۔

 

فواد چوہدری کا مزید کہنا تھا کہ سپریم کورٹ آف پاکستان  وہ مواد دیکھ لے یہ تو نہیں ہوگا کہ جس مواد پر فیصلہ ہوا وہ مواد دیکھ لیں اور اس حوالے سے ایک ان کیمرہ سماعت ہونی چاہیے۔تحریک انصاف کےرہنما نے  کہا  کہ حکومت تبدیلی کی  یہ ایک عالمی  سازش تھی اور اگر حکومت   بدلنے  کی یہ کوشش کامیاب ہوتی ہے تو اس کا مطلب ہے ہم قرارداد پاکستان والے دور میں واپس چلے جائیں گے۔عدلیہ اور پارلیمان کو اپنی آئینی حدود میں آگے بڑھنا ہے  جبکہ آج ڈالر اپنی حد کراس کرچکا ہے اور پاکستانی معیشت اس بحران کے نتیجے میں تباہی کے دہانے پر پہنچ چکی ہے۔پاکستان کو اس  وقت صرف اور صرف استحکام کی ضرورت ہے جس کا واحد حل  نئے انتخابات ہیں ۔

 

دوسر ی جانب سپریم کورٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے پاکستان مسلم لیگ ن کی  مرکزی ترجمان  مریم اورنگزیب کا کہنا تھا  کہ ریاست مدینہ کے نام پر سیاست کر کے عوام کو لوٹا گیا ہے۔مریم اورنگریب نے کہا کہ  کرائے کے ترجمان دوسروں پر اُنگلیاں اٹھاتے ہیں اور جمہوریت کے لباس میں آمرانہ اقدامات کرتے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم  نے ملک میں سویلین مارشل لا لگایا اورآج پانچواں روز ہے ملک میں آئین معطل ہے جب کہ  آئین شکنوں کے خلاف آرٹیکل 6 کا کیس چلنا چاہیئے  اور ڈالر کی قیمت اس وقت 190 روپے کے قریب پہنچ گئی ہے۔

 

 

100سےزائدممتازماہرین تعلیم کاچیف جسٹس کوکھلاخط